’جلد وکٹیں گرنے سے ہدف دور ہوتا گیا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مہندر سنگھ دھونی نے ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ سے فوری ریٹائرمنٹ کو خارج ازامکان قرار دے دیا

بھارتی کرکٹ ٹیم کے کپتان مہندر سنگھ دھونی کا کہنا ہے کہ 329 رنز کا ہدف عبور کیا جاسکتا تھا لیکن تین وکٹیں گرنے اور بڑی پارٹنرشپس قائم نہ ہونے کے سبب یہ ممکن نہ ہوسکا۔

آسٹریلیا کے ہاتھوں سیمی فائنل میں 95 رنز کی شکست کے بعد انتہائی خوش مزاجی اور اپنے مخصوص پرسکون انداز میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مہندر سنگھ دھونی نے ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ سے فوری ریٹائرمنٹ کو خارج ازامکان قرار دے دیا۔

مہندر سنگھ دھونی نے کہا کہ انہوں نے یہ سوچ رکھا تھا کہ اگر 30 اوورز تک وکٹیں بچی رہیں تو پھر ہدف حاصل کیا جاسکتا تھا لیکن 12 اوورز کے بعد بھارتی بیٹنگ لڑکھڑا گئی۔

مہندر سنگھ دھونی سے ویراٹ کوہلی کے غلط شاٹ پر آؤٹ ہونے کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ کرکٹ میں اکثر ایسا ہوتا ہے کہ بیٹسمین جو شاٹ کھیلنا چاہتے ہیں وہ نہیں کھیل پاتے ۔

جب حریف ٹیم تین سو رنز بنا دیتی ہے اور اس کے پاس معیاری بولنگ ہوتی ہے تو پھر بیٹسمین کو خطرہ مول لینا پڑتا ہے۔کوہلی نے بھی ایسا ہی شاٹ کھیلا جس میں وہ کامیاب نہ ہوسکے۔

دھونی نے کہا کہ ٹاس ہارنے پر وہ پریشان تھے لیکن اسپنرز نے بہتر بولنگ کی۔ ریورس سوئنگ بھی ہورہی تھی جس پر ہمارے بولرز زیادہ اچھی کارکردگی دکھاسکتے تھے لیکن اس کے باوجود آسٹریلیا کو 328 رنزتک محدود کیا گیا۔ بھارتی ٹیم کو اچھی بیٹنگ کی ضرورت تھی جو نہ ہوسکی۔

عالمی اعزاز سے محرومی کے بارے میں دھونی کا کہنا ہے کہ یہ کھیل کا حصہ ہے ۔ بھارت نے بھی کسی سے عالمی اعزاز حاصل کیا تھا اب اس سے کوئی اور لے گیا۔

دھونی نے اس عالمی کپ میں اپنے فاسٹ بولرز کی کارکردگی پر اطمینان ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ان بولرز نے آسٹریلیا میں رہ کر جو کچھ سیکھا ہے امید ہے جب وہ بھارت سے باہر سیریز میں دوبارہ بولنگ کریں گے تو یہ تجربہ ان کے کام آئے گا۔

اسی بارے میں