’ورلڈکپ کے فائنل میں ففٹی ففٹی چانس ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مک کلم کا کہنا ہے کہ صرف ایک بڑی رکاوٹ رہ گئی ہے جسے پار کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی

نیوزی لینڈ کی کرکٹ ٹیم کے کپتان برینڈن میک کلم کے نزدیک ورلڈ کپ کے فائنل میں دونوں ٹیموں کی فتح کے امکانات برابر ہیں۔

نیوزی لینڈ کی ٹیم اتوار کو پہلی بار ورلڈ کپ کا فائنل کھیلنے میدان میں اترے گی جہاں اس کا مقابلہ چار مرتبہ کی عالمی چیمپیئن آسٹریلیا سے ہوگا۔

برینڈن میک کلم کا کہنا ہے کہ ورلڈ کپ نیوزی لینڈ کے کھلاڑیوں کے لیے بہت زبردست رہا ہے اور تمام کھلاڑی بہت زیادہ پرجوش ہیں۔

نیوزی لینڈ کی ٹیم اب تک اس ٹورنامنٹ میں کوئی میچ نہیں ہاری اور میک کلم کا کہنا ہے کہ اس عالمی کپ میں ان کی ٹیم نے جس طرح کی کارکردگی دکھائی ہے اس نے لوگوں کو بے حد متاثر کیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ اب ان کی ٹیم کے سامنے صرف ایک بڑی رکاوٹ رہ گئی ہے جسے پار کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔

میک کلم نے توقع ظاہر کی کہ اگر ان کی ٹیم اچھا کھیلی تو میچ کے بعد سب کے چہروں پر مسکراہٹ ہوگی۔ ’وہ لمحہ یقینی طور پر نیوزی لینڈ اور نیوزی لینڈ کی کرکٹ کے لیے بہت یادگار ہوگا۔‘

انھوں نے کہا کہ زیادہ پرانی بات نہیں ہے جب نیوزی لینڈ کی ٹیم کو بین الاقوامی کرکٹ میں زیادہ اہمیت حاصل نہیں تھی لیکن سخت محنت اور اچھے نتائج کے سبب اب صورتحال مختلف ہے۔

نیوزی لینڈ کی ٹیم کے بارے میں یہ تاثر پایا جاتا ہے کہ اس نے ابھی تک ورلڈ کپ میں اپنے تمام میچ ہوم گراؤنڈز پر کھیلے ہیں جو آسٹریلیا کے میلبرن کرکٹ گراؤنڈ کے مقابلے میں کافی چھوٹے ہیں اس لیے فائنل میں اسے دشواری کا سامنا ہوسکتا ہے۔

تاہم اس بارے میں کیوی کپتان کا کہنا تھا کہ ان کی ٹیم دنیا بھر کے بڑے میدانوں میں کھیل چکی ہے اور ان کے بلے بازوں کو میلبرن کے گراؤنڈ سے خود کو ہم آہنگ کرنے میں کوئی مشکل نہیں ہوگی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے درمیان رقابت صحت مندانہ ہے اور یہ صرف کرکٹ میں ہی نہیں بلکہ دوسرے کھیلوں میں بھی ہے اور ورلڈ کپ فائنل اس سے مختلف نہیں ہوگا۔

انھوں نے کہا کہ یہ برینڈن میک کلم بمقابلہ مائیکل کلارک نہیں بلکہ آسٹریلیا بمقابلہ نیوزی لینڈ ہوگا۔

اسی بارے میں