’کارکردگی میں آہستہ آہستہ بہتری آئے تو بہتر ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مستقبل کے لائحہ عمل کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ وہ چاہتے ہیں کہ پاکستان ٹیم بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرے

پاکستان کرکٹ ٹیم کے نومنتخب کپتان اظہر علی نے کہا ہے کہ وہ پاکستانی ٹیم کی کارکردگی میں تسلسل کے خواہشمند ہیں۔

اپنے تقرر کے اعلان کے بعد پیر کو لاہور میں میڈیا کے نمائندوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ’جب ٹیم متحد ہو کر کھیلے گی تو کارکردگی میں بہتری آئے گی۔‘

مستقبل کے لائحہ عمل کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ وہ چاہتے ہیں کہ پاکستان ٹیم بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرے اور تسلسل کے ساتھ کامیابی حاصل کرے۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر کوئی ڈرامائی تبدیلی نہ بھی آئے اور ٹیم کی پرفارمنس میں آہستہ آہستہ بہتری آتی رہے تو یہ زیادہ اہم ہے۔

اظہر علی نے کہا کہ پاکستان ٹیم جب ہار رہی ہوتی ہے تو اس پر بہت زیادہ دباؤ ہو جاتا ہے اور اس پر بہت زیادہ تنقید کی جاتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ حالیہ ورلڈ کپ میں بھی ایسا ہی ہوا لیکن وہ پاکستان کرکٹ ٹیم کو کریڈٹ دیتے ہوں جنھوں دباؤ میں اچھی کرکٹ کھیلتے ہوئے کم بیک کیا اور کوارٹر فائنل تک رسائی حاصل کی۔

سابق کپتان مصباح الحق کے بارے میں انھوں نے کہا کہ ان کی کارکردگی بہت زبردست رہی ہے اور ’میں انھیں سلیوٹ پیش کرتا ہوں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ مصباح الحق کے جانے کے بعد ون ڈے کرکٹ ٹیم میں تجربے کے حوالے سے ایک بہت بڑا خلا پیدا ہوگا جس کو نوجوان کھلاڑیوں کے ذریعے پر کرنے کی کوشش کی جائے گی تاہم یہ اتنا آسان نہیں ہوگا۔

اظہر علی نے کہا کہ مصباح الحق نے چار پانچ سال پاکستان ٹیم کی قیادت کی اور انھوں نے ہر اچھے اور برے وقت میں ٹیم کو سپورٹ کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ کے لیے مصباح الحق کی خدمات کو کبھی بھی فراموش نہیں کیا جا سکتا اور ’مصباح الحق کی قیادت میں ہی پاکستان ٹیم دنیا کی اچھی سے اچھی ٹیم کے خلاف سیریز جیتتی رہی ہے۔‘

اسی بارے میں