سو سالہ خاتون کا تیراکی میں ریکارڈ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption توقع ہے کہ ان کے حالیہ ریکارڈ کو گنیز بک آف دی ریکارڈ میں شامل کیا جائے گا

جاپان میں سو سالہ ایک خاتون تیراک نے 15 سو میٹر فری سٹائل سوئمنگ میں ایک نیا ریکارڈ بنایا ہے۔

میکو نگااوکا نے 25 میٹر کے سوئمنگ پول میں 15 سو میٹر سوئمنگ کر کے یہ ریکارڈ قائم کیا۔

میکو نگااوکا نے82 سال کی عمر میں تیراکی شروع کی تھی اور اس سے پہلے بھی 50 میٹر کے سوئمنگ پول میں 15 سو میٹر تیراکی کرنے کا ریکارڈ قائم کر چکی ہیں۔

انھوں نے بیک سٹروک تیراکی سے حالیہ ریکارڈ ایک گھنٹہ اور پندرہ منٹ میں بنایا۔

ماتسویاما میں منعقد ہونے والے مقابلوں میں سو سے 104 سال کی عمر کی درجہ بندی میں میکو نگااوکا کے علاوہ کوئی اور تیراک شامل نہیں تھا۔

میکو نگااوکا نے اپنی عمر کی درجہ بندی میں متعدد عالمی ریکارڈ اپنے نام کر رکھے ہیں اور انھیں تیراکی کی عالمی فیڈریشن سے 24 اعزازت مل چکے ہیں۔

توقع ہے کہ ان کے حالیہ ریکارڈ کو گینز بک آف ریکارڈز میں شامل کر لیا جائے گا۔

میکو نگااوکا نے اپنے گھٹنوں کی تھیراپی کے لیے تیراکی شروع کی تھی لیکن چند ہفتوں کی تربیت کے بعد ہی انھوں نے دنیا بھر میں منعقد ہونے والے مقابلوں میں شرکت کرنا شروع کر دی۔

نگااوکا نے زندگی کی سنچری پوری کرنے پر ایک کتاب بھی تحریر کی تھی اور اس کا عنوان تھا’ میں سو سال کی ہوں اور دنیا کی موجودہ بہترین تیراک ہوں۔‘

انھوں نے جاپان کی خبر رساں ایجنسی کیڈو کو بتایا’ میں 105 سال کی عمر تک تیراکی کرنا چاہتی ہوں، اگر میں اس وقت تک زندہ رہی۔‘

جاپان میں عمر رسیدہ افراد کی آبادی میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے اور گذشتہ سال کے سرکاری اعداد و شمار کے مطابق اس وقت ملک میں 59 ہزار افراد کر عمر سو سال تک ہے۔

جاپان میں ہی گذشتہ ہفتے دنیا کی عمر رسیدہ ترین خاتون 117 سال کی عمر میں انتقال کر گئی تھیں۔

اسی بارے میں