غسل خانے میں سمارٹ فون پر چالیں چیک کرنے پر ٹورنامنٹ سے باہر

تصویر کے کاپی رائٹ INDU PANDEY
Image caption کایوز غسل خانے میں ایک ہی مخصوص خانے میں جاتے اور ہر بار دس منٹ گزارتے

دبئی میں شطرنج کے ایک کھلاڑی کو اس وقت ٹورنامنٹ سے نکال دیا گیا جب یہ معلوم ہوا کہ انھوں نے غسل خانے میں اپنے سمارٹ فون پر اپنی چالیں چیک کی تھیں۔

اگر کایوز نگالڈزا نامی اس شاطر پر سمارٹ فون پر اپنی چالیں چیک کرنے کا الزام ثابت ہو گیا تو ان پر تین سال کی پابندی عائد ہو سکتی ہے۔

جارجیا کے چیمپیئن کایوز آرمینیا کے ٹگرن پیٹروسین کے خلاف دبئی اوپن کے چھٹے راؤنڈ میں کھیل رہے تھے۔

پیٹروسین نے حکام کو مطلع کیا کہ کایوز بار بار غسل خانے جا رہے ہیں۔

کایوز غسل خانے میں ایک ہی مخصوص خانے میں جاتے اور ہر بار دس منٹ گزارتے۔

جب کایوز غسل خانے سے باہر نکلے تو حکام کی جانب سے تلاشی میں ان کو ٹشو پیپر میں لپٹا ہوا سمارٹ فون ملا۔

ٹورنامنٹ کے ڈائریکٹر یحییٰ محمد صالح نے بی بی سی کو بتایا: ’کایوز نے کہا کہ یہ فون ان کا نہیں ہے لیکن اس فون پر ان کا فیس بک پیج کھلا ہوا تھا اور اس پر شطرنج کا پروگرام چل رہا تھا۔‘

اس ٹورنامنٹ میں پہلا انعام 12 ہزار ڈالر ہے۔

جورجیا کی شطرنج فیڈریشن نے اس واقعے کو افسوس ناک قرار دیا اور کہا کہ وہ کایوز کے بیان کے منتظر ہیں۔

جورجیا چیس فیڈریشن کی ترجمان صوفیا نے بی بی سی کو بتایا: ’کایوز بہت ذہین ہیں۔ وہ بہت اچھے نوجوان ہیں اور میں سوچ بھی نہیں سکتی تھی کہ وہ اس قسم کی حرکت کریں گے۔‘

26 سالہ کایوز عالمی رینکنگ میں 400 ویں نمبر پر ہیں۔

اسی بارے میں