’فیفاگرفتاریوں پر مزے لے رہا ہوں‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جب میں فیفا میں کرپشن کی بات کرتا تھا تو انھیں پاگل کہا جاتا تھا: میراڈونا

فٹبال کے عظیم کھلاڑی ڈیاگو میراڈونا نے فٹبال کی گورننگ باڈی کے اعلٰی اہلکاروں کی حراست کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ برسوں سے کہہ رہے ہیں کہ فیفا ایک بدعنوان ادارہ ہے لیکن اس کی کوئی سن نہیں رہا تھا۔

انھوں نے کہا کہ وہ فیفا اہلکاروں کی گرفتاری کی خبر کے مزے لے رہے ہیں۔

ڈیاگو میراڈونا نے ارجنٹائن کے ریڈیو سٹیشن ’لا ریڈ‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ جب وہ فیفا میں کرپشن کی بات کرتے تھے تو انھیں پاگل کہا جاتا تھا۔ ’اب ایف بی آئی نے سچ بتا دیا ہے۔‘

انھوں نے کہا: ’یہاں کوئی فٹبال نہیں، کوئی شفافیت نہیں ہے۔ بہت جھوٹ بولا جا چکا۔ سیپ بلاٹر کو منتخب کرنے کے لیے بہت ڈنر ہو چکے۔‘

ڈیاگو میراڈونا نے کہا کہ جو رقم ان ڈنروں پر خرچ کی جا رہی ہے اسے افریقہ میں بچوں کے لیے فٹبال گراونڈ بنانے پر خرچ ہونی چاہیے۔

ڈیاگو میراڈونا نے فیفا کے صدر کو خبردار کیا کہ اگلی گرفتاری سیب بلاٹر کی ہو سکتی ہے۔

میراڈونا بطور کھلاڑی بھی فیفا صدر سیپ بلاٹر پر تنقید کرتے رہے ہیں۔

سوئٹزرلینڈ میں گرفتار ہونے والے فیفا کے سات اہلکاروں کو امریکہ کے حوالے کیے جانے کا امکان ہے۔

ڈیاگو میراڈونا نے کہا : ’شاید سیپ بلاٹر کو اپنی وضاحت دینے کے لیے امریکہ جانا پڑے۔ وہ (ایف بی آئی) گذشتہ دس برسوں سے اس کے پیچھے ہیں۔‘

اسی بارے میں