زیکو فیفا کی صدارت کے خواہشمند

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption زیکو کا شمار برازیل کے عظیم ترین کھلاڑیوں میں ہوتا ہے

برازیل کے معروف کھلاڑی زیکو نے فٹبال کی عالمی تنظیم فیفا کی صدرات کے لیے انتخاب لڑنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

62 سالہ برازیلین کا پورا نام آرتھر کوئمبرا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ فیفا میں ہونے والی مبینہ بدعنوانی نے انھیں اداس کر دیا ہے۔

واضح رہے کہ فیفا کے موجودہ صدر سیپ بلیٹر نے گذشتہ ماہ پانچویں بار تنظیم کا صدر منتخب ہونے کے چار دن بعد اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

سیپ بلیٹر کا استعفیٰ امریکی اور سوئس حکام کی جانب سے فیفا میں ہونے والی مبینہ بدعنوانی کی تحقیقات کے سامنے آیا تھا۔

ریو ڈی جنیرو میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے زیکو کا کہنا تھا: ’یہ ہمارے کھیل کے لیے بری چیز ہے کہ ہم فٹبال میں بدعنوانی دیکھ رہے ہیں اور اس سے متعدد افراد کی جانب سے کی جانے والی محنت رائیگاں چلی گئی ہے۔ ان حالات میں میں سمجھتا ہوں کہ یہ میرا فرض ہے کہ میں اپنے تجربے اور علم کو استعمال کرتے ہوئے فیفا کی صدارت کے لیے انتخاب لڑوں۔‘

اگرچہ زیکو پوری دنیا میں فٹبال کھیل چکے ہیں تاہم انھیں فٹبال کی اتنی سینیئر سطح پر تنظیمی معاملات چلانے کا زیادہ تجربہ نہیں ہے۔

زیکو کا شمار برازیل کے عظیم ترین کھلاڑیوں میں ہوتا ہے اور انھوں نے فٹبال کے 1978، 1982 اور 1986 کے فائنلز میں اپنے ملک کی نمائندگی کی تھی۔

اس سے پہلے فیفا کے موجودہ صدر سیپ بلیٹر نے کہا تھا کہ جیسے ہی ان کے جانشین کا انتخاب ہو جائے گا وہ یہ عہدہ چھوڑ دیں گے۔

واضح رہے کہ امریکی حکام نے فیفا سے منسلک جن 14 ارکان پر دنیا بھر میں رشوت اور ٹھیکوں کے ذریعے پیسے بنانے کے الزام عائد کیا ہے ان میں سے سات نے سیپ بلیٹر کو پانچویں بار فیفا کا صدر منتخب کیا تھا۔

ان 14 افراد کےگروپ میں سے سات کو سوئٹزرلینڈ میں گرفتار کیا گیا تھا۔

دوسری جابنب سوئس استغاثہ سنہ 2022 میں قطر اور سنہ 2018 میں روس کو عالمی کپ کی میزبانی دیے جانے کی تحقیقات کر رہا ہے۔

اسی بارے میں