گال ٹیسٹ کا تیسرا دن، پاکستان کی آدھی ٹیم 118 رنز پر آؤٹ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption چھوتھے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی یونس خان تھے جو 47 رنز بنا کر دلروان پریرا کی گیند پر بولڈ ہوئے

گال میں کھیلے جار ہے پہلے کرکٹ ٹیسٹ میچ کے تیسرے دن کھیل کے اختتام پر پاکستان نے سری لنکا کے 300 رنز کے جواب میں 118 رنز بنائے تھے اور اس کے پانچ کھلاڑی آؤٹ ہوئے تھے۔

پاکستان کو فالو آن سے بچنے کے لیے مزید 33 رنز درکار ہیں جبکہ اسے سری لنکا کی مجموعی برتری ختم کرنے کے لیے 182 رنز کی ضرورت ہے۔

تیسرے دن کھیل کے اختتام پر اسد شفیق 14 اور سرفراز احمد 15 رنز پر کھیل رہے تھے۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

اس سے قبل کپتان مصباح الحق آؤٹ ہونے والے پانچویں کھلاڑی تھے جو 20 رنز بنا کر نوان پرادیپ کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

چھوتھے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی یونس خان تھے جو 47 رنز بنا کر دلروان پریرا کا شکار بنے۔

اس وقت کریز پر اسد شفیق اور سرفراز احمد موجود ہیں اور چوتھے دن کھیل کا آغاز کریں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption محمد حفیظ پاکستان کو ایک اچھا آغاز دینے میں ناکام رہے

آؤٹ ہونے والے پاکستانی بلےبازوں میں محمد حفیظ دو اور احمد شہزاد نو رنز بنا سکے اور دونوں کو پریرا نے آؤٹ کیا۔

تیسری وکٹ کے لیے یونس خان اور اظہر علی نے 24 رنز کی شراکت قائم کی جس کا خاتمہ رنگنا ہیراتھ نے اظہر کو ایل بی ڈبلیو کر کے کیا جنھوں نے 8 رنز بنائے۔

اس سے قبل سری لنکا کی ٹیم کوشل سلوا کی عمدہ بلے بازی کی بدولت 300 رنز بنانے میں کامیاب رہی۔

سلوا نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی دوسری اور پاکستان کے خلاف پہلی سنچری بنائی اور 125 رنز بنانے کے بعد ذوالفقار بابر کی تیسری وکٹ بنے۔

تیسرے دن آؤٹ ہونے والے پہلے سری لنکن بلے باز کپتان اینجلو میتھیوز تھے جو وہاب ریاض کی گیند پر 19 رنز بنانے کے بعد بولڈ ہوئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کوشل سلوا نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی دوسری اور پاکستان کے خلاف پہلی سنچری مکمل کی

ان کی جگہ آنے والے دنیش چندیمل نے 23 رن بنائے اور وہ ذوالفقار بابر کی پہلی وکٹ بنے۔

وتھانگے آؤٹ ہونے والے چھٹے سری لنکن بلے باز تھے جنھیں 18 رنز بنانے کے بعد محمد حفیظ نے اپنی ہی گیند پر کیچ کیا۔

پاکستان کو ساتویں کامیابی دوسرے سیشن کے آغاز میں ہی ملی جب یاسر شاہ نے پریرا کو سرفراز احمد کے ہاتھوں کیچ کروا دیا۔

دھمیکا پرساد 24 گیندیں کھیلنے کے باوجود بغیر کوئی رن بنائے ذوالفقار بابر کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوئے۔

پاکستان کی جانب سے وہاب ریاض اور ذوالفقار بابر نے تین، تین جبکہ محمد حفیظ اور یاسر شاہ نے دو، دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا ہے۔

پاکستانی فیلڈرز کی جانب ناقص فیلڈنگ کا سلسلہ تیسرے دن بھی جاری رہا اور مزید دو کیچ چُھوٹے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان نے پہلے بولنگ کا فیصلہ کرنے کے باوجود دو فاسٹ بولروں وہاب ریاض اور جنید خان کو ہی کھلایا ہے

تیسرے دن کے کھیل میں پاکستان نے دو جبکہ سری لنکا نے اپنا ایک ایک ریویو بھی ضائع کیا۔

پاکستانی ریویو پر چندیمل اور ہیراتھ کو ناٹ آؤٹ دیے جانے کا فیصلہ تھرڈ امپائر نے بھی برقرار رکھا جبکہ سری لنکا کے بلے باز دھمیکا پرساد کو آؤٹ دیے جانے کا فیصلہ بھی تبدیل نہ ہوا۔

پہلی اننگز میں سری لنکا کے آؤٹ ہونے والے دیگر بلے بازوں میں نصف سنچری بنانے والے کمار سنگاکارا کے علاوہ کرونارتنے اور لہیرو تھریمانے شامل ہیں۔

اس ٹیسٹ میچ کے پہلے دن کا کھیل بارش کی وجہ سے نہیں ہو سکا تھا اور دوسرے دن بھی میدان گیلا ہونے کے باعث میچ سوا دو گھنٹے کی تاخیر سے شروع ہوا تھا۔

پاکستان اور سری لنکا کی تین ٹیسٹ میچوں کی یہ سیریز دو سال کے مختصر عرصے میں ان دونوں ٹیموں کے درمیان کھیلی جانے والی چوتھی سیریز ہے۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم سنہ 2006 کے بعد سے سری لنکا میں کوئی ٹیسٹ سیریز نہیں جیت پائی ہے۔ آخری بار اس نے انضمام الحق کی قیادت میں دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز ایک صفر سے جیتی تھی۔

اسی بارے میں