’مستفیض کٹر:ہم نے ٹرائی کیا،آپ بھی کریں‘

تصویر کے کاپی رائٹ PRATHAMA ALO
Image caption بھارتی کرکٹروں کے ہاتھ میں ایک بینر ہے جس پر لکھا ہے ’ہم نے ٹرائی کیا، آپ بھی ٹرائی کریں‘

حال ہی میں بنگلہ دیش میں بھارت اور بنگلہ دیش کے درمیان ایک روزہ میچوں کی سیریز میں بھارت کے ہارنے کے بعد ڈھاکہ کے ایک اخبار ’پہلے الو‘ میں ایک تصویر شائع ہوئی جس کے بعد بھارتی میڈیا میں ہلچل مچ گئی۔

اس تصویر میں بھارتی ٹیم کے تمام کھلاڑیوں کے آدھے سر کے بال صاف کردیے گئے ہیں۔

ویراٹ کوہلی اور دھونی سمیت بھارتی کرکٹ ٹیم کو جہاں کھڑا دکھایا گیا ہے اس کے پیچھے ایک دکان کے پوسٹر پر لکھا ہے ’میڈ ان بنگلہ دیش مستفیض کٹر یہاں ملتا ہے‘۔

اور بھارتی کرکٹروں کے ہاتھ میں ایک بینر ہے جس پر لکھا ہے ’ہم نے ٹرائی کیا، آپ بھی ٹرائی کریں‘۔

حالیہ ایک روزہ کرکٹ سیریز میں مستفیض نے جس گیند پر بھارت کے اہم کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا گیند کو کرکٹ کی زبان میں ’کٹر‘ بھی کہا جاتا ہے۔

اس اشتہار پر بھارتی میڈیا میں ہنگامہ کھڑا ہو گیا ہے۔

چینلز غصے میں

ہر ہندوستانی چینل نے اس پر کچھ نہ کچھ تبصرہ کیا۔

زی نیوز نے اسے بھارتی کرکٹ کی توہین قرار دیا۔

لیکن تعجب کی بات ہے کہ بہت کم لوگ ہیں جو اس کے اہم پہلو کو پہچان پا رہے ہیں۔

سینئر کھیل صحافی دیباشيش دتہ کہتے ہیں ’ورلڈ کپ کے دوران 19 مارچ کو جب بنگلہ دیش بھارت کے ہاتھوں ہارا تو بنگلہ دیش کے لوگوں کو لگا کہ آئی سی سی چیئرمین شری نواسن نے امپائر سے ساز باز کر کے بھارت کو جتايا ہے۔ یہ گرافکس اسی غصے کا اظہار ہے۔‘

جڑیں کہیں اور

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بھارتی اشتہار کے جواب میں بنگلہ دیش میں ’بیمبو از آن‘ (بانس تیار) کا متنازع اشتہار نکالا

لیکن کولکتہ کے سینئر سپورٹس رپورٹر گوتم بھٹاچاريا نے بی بی سی کو بتایا ’اس تصویر میں اگر حد پار بھی ہوئی ہے تو اس کی وجہ صرف کرکٹ نہیں بلکہ بھارت بنگلہ دیش کے تعلقات کی جڑیں بھی موجود ہیں۔ بنگلہ دیش کے لوگوں کا خیال ہے کہ پانی کی تقسیم جیسے مسائل پر ہندوستان کے بڑے بھائی کی طرح دھونس جماتا ہے۔‘

ان کا کہنا ہے کہ بنگلہ دیشی اخبار میں چھپی یہ تصویر اسی مسئلے کا نتیجہ ہے۔

ویسے بھارت اور بنگلہ دیش کے درمیان کرکٹ کو لے کر اشتہاری جنگ کوئی نئی بات نہیں ہے۔

ورلڈ کپ کے دوران بھارت میں جو ’موقع موقع‘ ٹی وی اشتہارات بنائے گئے تھے اس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ بھارت نے ہی بنگلہ دیش کو ’پیدا‘ کیا تھا۔

اشتہاری جنگ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایک روزہ کرکٹ سیریز میں مستفیض نے جس گیند پر بھارت کے اہم کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا گیند کو کرکٹ کی زبان میں ’کٹر‘ بھی کہا جاتا ہے

اس کے جواب میں بنگلہ دیشی کرکٹ شائقین نے بہت سے ویڈیو بنا کر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کیے تھے۔

گذشتہ ماہ جب بھارتی کرکٹ ٹیم بنگلہ دیش میں کھیلنے گئی تو بھارت میں ایک ٹی وی اشتہار بنایا گیا جس میں بنگلہ دیش کو ایک ’چھوٹا بچہ‘ بتایا گیا تھا۔

اس کے جواب میں بنگلہ دیش میں ’بیمبو از آن‘ (بانس تیار) کا متنازع اشتہار نکالا۔

بنگلہ دیشی اخبار ’پہلے الو‘ کے سپورٹس ایڈیٹر اتپل شبھر نے بی بی سی سے کہا ’اخبار کے اس ہفتہ وار شمارے میں ہم سیاسی شخصیات سے لے کر کرکٹ تک پر تبصرے کرتے ہیں۔ اس میں بنگلہ دیش کے وزیر اعظم تک کو نہیں بخشا جاتا ہے۔ اس لیے اس کا غلط مطلب نہ نکالا جائے۔‘

اشتہاری دنیا کی مشہور شخصیت پرہلاد ككڑ کا کہنا ہے ’اگر یہ تصویر انڈیا کو چھوڑ کر کسی اور ٹیم پر ہوتی توہم بہت مزے لیتے۔ اگر یہ آسٹریلیا کو لے کر بنا ہوتا تو ہم بہت مزے لیتے اور پاکستان کو لے کر بنتا تو شاید دوگنا مزے لیتے۔‘

اسی بارے میں