’ زندگی کرکٹ سے زیادہ اہم ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ PTI
Image caption انوراگ ٹھاکر (دائیں) نے میڈیا سے بات چیت کے دوران کہا کہ دہشت گردی اور کرکٹ دونوں ایک ساتھ نہیں چل سکتے

بھارتی کرکٹ کنٹرول بورڈ کے سیکرٹری انوراگ ٹھاکر نے کہا ہے کہ موجودہ حالات میں پاکستان کے ساتھ کرکٹ تعلقات استوار کرنا ممکن نہیں ہے۔

انھوں نے یہ بات پیر کو بھارتی پنجاب کے ضلع گرداس پور میں شدت پسندوں کے حملے کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہی۔

اس حملے میں دس افراد ہلاک ہوئے ہیں جن میں چار پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔

تاحال بھارتی حکومت کی طرف سے اس حملے کے ذمہ داران کے حوالے سے کوئی بیان سامنے نہیں آیا ہے اور یہ کہا گیا ہے کہ وزیرِ داخلہ راج ناتھ سنگھ منگل کو اس سلسلے میں پریس کانفرنس کریں گے۔

آئی سی سی کے فيوچر ٹور پروگرام کے مطابق بھارت اور پاکستان کے درمیان کرکٹ سریز دسمبر 2015 میں ہونی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کی درخواست پر بی سی سی آئی نے اس سیریز کے لیے رضامندی ظاہر کی تھی۔

تاہم اب انوراگ ٹھاکر نے میڈیا سے بات چیت کے دوران کہا کہ ’دہشت گردی اور کرکٹ دونوں ایک ساتھ نہیں چل سکتے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Both Photos by AFP
Image caption پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات میں کشیدگی کا براہ راست اثر کرکٹ پر پڑتا رہا ہے

گرداس پور حملے کی مذمت کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ’ایک بھارتی ہونے کے ناطے میں محسوس کرتا ہوں کہ ایک بھارتی کی زندگی کرکٹ سے زیادہ اہم ہے۔‘

پاکستان سیریز کے بارے میں پوچھے گئے سوال پر انھوں نے کہا، ’دہشت گرد حملوں کے ساتھ کرکٹ سیریز نہیں ہو سکتی۔‘

بھارتی کرکٹ بورڈ کی جانب سے باقاعدہ طور پر دسمبر میں ہونے والی سیریز کے التوا یا منسوخی کے بارے میں کچھ نہیں کہا گیا ہے جبکہ پاکستانی کرکٹ بورڈ کی جانب سے بھی اس سلسلے میں کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات میں کشیدگی کا براہ راست اثر کرکٹ پر پڑتا رہا ہے جس کی وجہ سے دونوں ملکوں کے درمیان آئی سی سی کے ’فیوچر ٹور پروگرام‘ میں شامل ہوتے ہوئے بھی سیریز باقاعدگی سے نہیں کھیلی جاسکی ہیں۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان آخری ٹیسٹ سیریز سنہ 2007 میں بھارت میں کھیلی گئی تھی۔

جس کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات نومبر سنہ 2008 میں ممبئی دہشت گردی کے بعد سخت کشیدہ ہوگئے تھے، تاہم دسمبر سنہ 2012 میں پاکستانی ٹیم نے ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی سیریز کھیلنے کے لیے بھارت کا مختصر دورہ کیا تھا۔

اسی بارے میں