شارجہ ٹیسٹ اور سیریز پاکستان کے نام

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یاسر شاہ نے تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کیں

شارجہ میں پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان کھیلے جانے والے تیسرے اور آخری ٹیسٹ میچ آخری روز پاکستان نے انگلینڈ کو 127 رنز سے شکست دے کر میچ اور تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز جیت لی ہے۔

جمعرات کو پانچویں روز پاکستان کے 284 رنز کے ہدف کے تعاقب میں انگلینڈ کی پوری ٹیم 156 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی۔

انگلینڈ کی جانب سے کک نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کرتے ہوئے اپنی نصف سنچری سکور کی تاہم وہ بھی اپنی ٹیم کو کامیابی نہ دلا سکے۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

شارجہ ٹیسٹ کے چوتھے دن کی تصاویر

پاکستان کی جانب سے لیگ سپنر یاسر شاہ نے عمدہ بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے میچ میں سات وکٹیں حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں بھی سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کیں۔

انگلینڈ نے 46 رنز دو کھلاڑی آؤٹ سے اپنی اننگز کا آغاز کیا تو ابتدا سے ہی اسے مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور دن کے دوسرے ہی اوور میں اس کی تیسری وکٹ گر گئی۔

آخری ٹیسٹ میچ کے آخری روز انگلینڈ کی وکٹیں وقفے وقفے سے گرتی رہیں اور کوئی بھی بلے باز کریز پر جم کر نہ کھیل سکا۔

سمیت پٹیل اور جانی بیرسٹو بغیر کوئی رنز بنائے آؤٹ ہوئے جبکہ جیمز ٹیلر دو، عادل رشید 22 اور براڈ 20 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

پاکستان کی جانب سے دوسری اننگز میں یاسر شاہ نے چار، شعیب ملک نے تین اور ذوالفقار بابر نے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption میچ کے آخری روز انگلینڈ کے آؤٹ ہونے والے پہلے کھلاڑی جو روٹ تھے جنھیں یاسر شاہ نے آؤٹ کیا

بدھ کو میچ کے چوتھے دن کھیل کے اختتام پر انگلینڈ نے دو وکٹوں کے نقصان پر 46 رنز بنائے تھے جبکہ اس کا ہدف 284 رنز ہے۔

چوتھے روز آؤٹ ہونے والے پہلے انگلش بلے باز معین علی تھے جنھیں 22 کے انفرادی سکور پر شعیب ملک نے ایل بی ڈبلیو کیا۔ شعیب نے ہی ایئن بیل کی وکٹ بھی لی جو کوئی رن نہ بنا سکے۔

پاکستانی بولروں نے انگلش اننگز کے ابتدائی 18 اوورز میں ہی اپنے دونوں ریویوز ضائع کر دیے جب پہلے الیسٹر کک اور پھر جو روٹ کے خلاف امپائر کے ناٹ آؤٹ فیصلے کو تھرڈ امپائر نے برقرار رکھا۔

اس سے قبل چوتھے دن چائے کے وقفے کے بعد پاکستان کی پوری ٹیم 355 رنز بنا آؤٹ ہوگئی تھی۔

دن کے پہلے سیشن میں نائٹ واچ مین راحت علی کی وکٹ کے علاوہ پاکستان کی کوئی وکٹ نہیں گری تھی۔

پاکستانی اننگز کی خاص بات اوپنر محمد حفیظ کی شاندار بلے بازی تھی جو 151 رنز کی اننگز کھیل کر پویلین لوٹے۔ یہ ٹیسٹ کرکٹ میں ان کی نویں سنچری تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اس ٹیسٹ میچ کی پہلی اننگز میں شعیب ملک چار اور دوسری اننگز میں دو وکٹیں حاصل کر چکے ہیں

ان کے علاوہ اسد شفیق نے 46، مصباح الحق نے 36 جبکہ سرفراز احمد نے 38 رنز کی اننگز کھیل کر پاکستان کو برتری دلوانے میں اہم کردار ادا کیا۔

انگلینڈ کے لیے سٹوئرٹ براڈ نے تین، جیمز اینڈرسن نے دو وکٹیں لیں جبکہ عادل رشید، سمت پٹیل اور معین علی ایک ایک وکٹ لینے میں کامیاب رہے۔

اس میچ میں پاکستان نے پہلی اننگز میں 234 رنز بنائے تھے جس کے جواب میں انگلش ٹیم تیسرے دن اپنی پہلی اننگز میں 306 رنز بنا کر آؤٹ ہوئی تھی اور اسے پاکستان پر 72 رنز کی برتری حاصل ہوئی تھی۔

تین میچوں کی اس ٹیسٹ سیریز میں پاکستانی ٹیم کو ایک صفر کی ناقابلِ شکست برتری حاصل ہے اور اگر وہ یہ میچ بھی جیتنے میں کامیاب ہوتی ہے تو ٹیسٹ ٹیموں کی عالمی درجہ بندی میں دوسرے نمبر پر پہنچ جائے گی۔

اسی بارے میں