’سعید اجمل نے معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption سعید اجمل کے بولنگ ایکشن کو سنہ 2014 میں ٹیسٹ کے بعد غیرقانونی قرار دیا گیا تھا

پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے آف سپنر سعید اجمل کو انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے بولنگ ایکشن کے طریقہ کار کا جائزہ لینے کے عمل کو تنقید کا نشانہ بنانے پر شو کاز نوٹس بھیجا گیا ہے۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے چیئرمین پی سی بی شہریار خان نے بتایا کہ ’سعید اجمل کی جانب سے آئی سی سی کے طریقہ کار پر تنقید کرنا ان کے کانٹریکٹ کی خلاف ورزی ہے۔‘

کیا سعید اجمل ماضی کا حصہ بن چکے؟

شہریار خان نے کہا کہ ’سعید اجمل کو اس طرح بات نہیں کرنا چاہیے تھی۔‘

واضح رہے کہ سعید اجمل نے گذشتہ دنوں نجی چینل سے بات کرتے ہوئے آئی سی سی پر دہرا معیار اپنانے کا الزام عائد کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ آف سپنروں کو غیرمنصفانہ طریقے سے بولنگ ایکشن پر نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

سعید اجمل کا کہنا تھا کہ کچھ ملکوں خصوصاً پاکستان کے کھلاڑیوں کو اس کا زیادہ نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ انھوں نے الزام عائد کیا کہ بھارتی سپنر ہربھجن سنگھ کا ایکشن بھی مشکوک ہے۔

انھوں نے اپنے انٹرویو میں یہ سوال کیا تھا کہ ’صرف آف سپنر ہی کیوں نشانے پر ہیں، لیفٹ آرم سپنر، لیگ سپنر اور فاسٹ بولر کیوں نہیں؟‘

سعید اجمل کے اس انٹرویو کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ نے انھیں شو کاز نوٹس جاری کیا ہے اور ان سے وضاحت طلب کی ہے۔

شہریار خان نے بتایا کہ اس بارے میں آئی سی سی کی جانب سے کسی قسم کی کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ سعید اجمل کے بولنگ ایکشن کو سنہ 2014 میں ٹیسٹ کے بعد غیرقانونی قرار دیا گیا تھا جہاں ان کا ایکشن مقررہ حد سے تجاوز کر رہا تھا۔

رواں سال کےآغاز میں انھیں اپنا بولنگ ایکشن تبدیل کرنے کے بعد بولنگ کروانے کی اجازت مل گئی تھی، تاہم اپنے نئے ایکشن کے ساتھ زیادہ موثر نہ ہونے کی وجہ سے وہ ٹیم میں جگہ بنانے میں ناکام رہے ہیں۔

اسی بارے میں