پاک بھارت کرکٹ سیریز، سری لنکا میزبانی پر تیار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption تاہم یہ پہلے سے طے شدہ پروگرام کی مکمل ٹیسٹ، ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی سیریز کے بجائے پانچ یا چھ محدود اوورز کے میچز پر مشتمل ہوگی

سری لنکا کی کرکٹ انتظامیہ کے مطابق وہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کرکٹ سیریز کی میزبانی کرنے پر تیار ہے۔

پیر کو سری لنکا کرکٹ کی عبوری کمیٹی نے ملک میں دونوں ممالک کی سیریز کی میزبانی کرنے پر اپنی رضامندی ظاہر کر دی ہے۔

سری لنکا کرکٹ کے نائب صدر کوشل گونسیکرا نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ’کرکٹ سری لنکا میزبانی کرنے پر راضی ہے اور اب یہ پاکستان اور بھارت کے کرکٹ بورڈز پر منحصر ہے کہ وہ سری لنکا میں کھیلنے یا نہ کھیلنے کے بارے میں کیا طے کرتے ہیں۔‘

پاک بھارت سیریز، سری لنکا میں کھیلے جانے کا امکان

پاکستان کرکٹ ٹیم کو بھارت کا دورہ نہیں کرنا چاہیے: چوہدری نثار

انھوں نے مزید کہا کہ ’ہم سے رابط کیا گیا تھا اور ہم نے وزارتِ کھیل سے منظوری کی صورت میں اپنی رضامندی ظاہر کر دی تھی اور میرے خیال میں اس میں کوئی مسئلہ نہیں ہوگا۔‘

کوشل گونسیکرا کےمطابق اعلیٰ درجے کے کرکٹ مقابلے کی میزبانی کرنا ہمارے لیے اعزاز کی بات ہو گی۔

اس سے پہلے بی بی سی کو معلوم ہوا تھا کہ دونوں ملکوں کی جانب سے اس سیریز کے بارے میں سخت موقف اختیار کیے جانے کے بعد یہ تجویز سامنے آئی ہے کہ یہ سیریز سری لنکا میں کھیلی جائے۔

بھارتی کرکٹ بورڈ کی ورکنگ کمیٹی کا اجلاس 27 نومبر کو ہونے والا ہے جس میں اس تجویز کی منظوری کے امکانات روشن ہیں۔

یاد رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کا پاک بھارت سیریز کے بارے میں موقف یہ ہے کہ چونکہ یہ اس کی ہوم سیریز ہے لہٰذا وہ اس کی میزبانی متحدہ عرب امارات میں کرنا چاہتا ہے، لیکن بھارتی کرکٹ بورڈ نے یہ سیریز متحدہ عرب امارات میں کھیلنے سے انکار کر دیا ہے اور یہ تجویز پیش کی ہے کہ پاکستانی ٹیم بھارت آ کر سیریز کھیلے جس پر پاکستان تیار نہیں۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان اس ڈیڈلاک کو ختم کرنے کے لیے انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے صدر جائلز کلارک بھی حرکت میں آگئے ہیں اور انہی کی کوششوں کے نتیجے میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہریار خان اور بھارتی کرکٹ بورڈ کے صدر ششانک منوہر کے درمیان اتوار کے روز دبئی میں آئی سی سی کے صدر دفتر میں ملاقات ہوئی۔

سری لنکا میں اس سیریز کے انعقاد کی تجویز بھی اسی سلسلے کی ایک اہم کڑی ہے۔سری لنکا کی ٹیم چونکہ آئندہ ماہ نیوزی لینڈ کے دورے پر ہوگی لہذا سری لنکا کے میدانوں کی دستیابی کا مسئلہ بھی درپیش نہیں ہوگا۔

سری لنکا سنہ 2002 میں بھی پاکستان کی آسٹریلیا کے خلاف ہوم سیریز کے پہلے ٹیسٹ کی میزبانی کر چکا ہے۔

اسی بارے میں