ہیمبرگ کے شہری اولمپکس کی میزبانی کے مخالف

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption منصوبے کے ناقدین کا کہنا ہے کہ 11 ارب 20 کروڑ یورو کی لاگت سے اولمپکس منعقد کروانے کا یہ منصوبہ اسراف پر مبنی تھا

جرمنی کے شہر ہیمبرگ کے شہریوں نے سنہ 2024 کے اولمپکس اور پیرالمپکس مقابلوں کی میزبانی کے خلاف ووٹ دیا ہے۔

ہیمبرگ ان اولمپکس کھیلوں کی میزبانی کے لیے روم، پیرس، بڈاپسٹ اور لاس اینجلس کے ساتھ شامل تھا۔

اتوار کے روز ہونے والے ریفرینڈم میں ہیمبرگ اور اس کے نزدیکی شہر کیل کے 51.7 فیصد رہائشیوں نے اولمپکس کی میزبانی کے خلاف ووٹ ڈالے۔

میزبانی کی صورت میں کشتی رانی کے مقابلوں کا انعقاد کیل میں ہونا تھا۔

جرمنی کے اولمپکس حکام نے میزبان امیدوار شہر کے طور پر ہیمبرگ کو برلن پر ترجیح دی تھی۔

ہیمبرگ کے میئر اولوف شولز کا کہنا ہے کہ ’یہ وہ فیصلہ ہے جو ہم نہیں چاہتے تھے، لیکن یہ واضح ہے۔‘

سنہ 1972 میں میونخ میں ہونے والے اولمپکس کے بعد سے جرمنی نے اولمپکس مقابلوں کی میزبانی نہیں کی ہے۔

اس منصوبے کے ناقدین کا کہنا ہے کہ 11 ارب 20 کروڑ یورو کی لاگت سے اولمپکس منعقد کروانے کا یہ منصوبہ اسراف پر مبنی تھا۔

دو سال قبل میونخ کے شہری بھی 2022 کے موسم سرما کے اولمپکس مقابلوں کی میزبانی کے خلاف ووٹ دے چکے ہیں۔

رواں سال جولائی میں امریکی شہر بوسٹن نے بھی شہریوں کی حمایت حاصل نہ ہونے کے بعد 2024 کے مقابلوں کی میزبانی کی دوڑ سے باہر ہونے کا فیصلہ کیا تھا۔

سنہ 2024 کے اولمپک کھیلوں کی میزبانی کے لیے منتخب ہونے والے شہر کے نام کا اعلان ستمبر 2017 میں کیا جائے گا۔

اسی بارے میں