’ورلڈ ٹی 20 کے لیے ٹیم کا انتخاب مشکل ہوگیا‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اِس پورے دورے کے دوران ہم نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ دیکھا: اوئن مورگن

پاکستان کو ٹی 20 سیریز میں وائٹ واش کرنے کے باوجود انگلش کرکٹ ٹیم کے کپتان اوئن مورگن کا کہنا ہے کہ وہ ابھی تک یہ فیصلہ نہیں کر پائے کہ ورلڈ ٹی ٹوئنٹی مقابلوں کے لیے اُن کی بہترین ٹیم کیا ہوگی۔

انگلش ٹیم بھارت میں ہونے والے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی سے قبل پانچ میچوں میں لگاتار ناقابل شکست رہی ہے اور ٹورنامنٹ سے قبل اسے دو میچ مزید کھیلنے ہیں۔

انگلینڈ نے پاکستان کو سپر اوور میں شکست دے دی

29 سالہ مورگن کا کہنا ہے کہ ’مجھے نہیں معلوم کہ میرے بہترین 11 کھلاڑی کون سے ہوں گے لیکن یہ پریشانی کی بات نہیں ہے۔‘

’ہماری تبدیلیوں کے پیچھے دلیل یہ ہے کہ یہ طویل مدتی منصوبہ ہے۔‘

پاکستان کے خلاف سیریز میں سسیکس سے تعلق رکھنے والے آل راؤنڈر کِرس جورڈن، ہیمپشائر کے بلے باز جیمز وِنس، لنکا شائر کے سپینر سٹیفن پیری، یارک شائر کے فاسٹ بولر لیئم پلنکٹ اور کینٹ کے بلے باز سیم بلنگز نے متاثر کُن کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

جیمز وِنس تو تین میچوں کی سیریز میں 125 رنز بنانے پر سیریز کے بہترین کھلاڑی بھی قرار پائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption جیمز وِنس تین میچوں کی سیریز میں 125 رنز بنانے پر سیریز کے بہترین کھلاڑی قرار پائے

مورگن کا کہنا ہے کہ ’سیریز کے دوران متواتر تبدیلیوں کی وجہ سے اب ہمارے پاس 15 سے 17 نام موجود ہیں جن میں سے ہم کھلاڑیوں کا انتخاب کر سکتے ہیں۔‘

11 مارچ کو ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے آغاز سے قبل انگلینڈ کو صرف دو بین الاقوامی میچ کھیلنے ہیں جو دونوں جنوبی افریقہ کے خلاف ہیں۔

مورگن ٹورنامنٹ کے لیے صرف 15 کھلاڑیوں کو ساتھ لے جاسکتے ہیں اور سلیکٹرز کی جانب سے آل راؤنڈر بین سٹوکس کو بلانے کا امکان ہے جس کا مطلب ہے کہ جن کھلاڑیوں نے پاکستان کو شکست دینے میں مدد کی وہ اب بھی باہر ہو سکتے ہیں۔

مورگن کا کہنا ہے کہ ’اِس پورے دورے کے دوران ہم نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ دیکھا ہے۔‘

’ہم نے اپنے باؤلروں کی کاکردگی کا بھی جائزہ لیا ہے۔ کرس جورڈن، عادل رشید اور سٹیفن پیری اور معین علی نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کیا اور ورلڈ ٹی 20 کے لیے ٹیم کا انتخاب کرنا ہمارے لیے مشکل ہوگا۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’ہمیں ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے دوران بھارت میں جس صورتحال کا سامنا ہو گا، ہم اُس سے ملتی جلتی صورتحال میں کھیل رہے ہیں، ہم سپن کا بہت زیادہ سامنا کر رہے ہیں اور یہ ٹورنامنٹ جیتنے کے لیے بہت اچھا ہے۔‘

اسی بارے میں