’پاکستان کرکٹ بورڈ بھارت کی منتیں نہ کرے‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption پاکستان کرکٹ بورڈ کو بیانات بازی اور بھارتی کرکٹ بورڈ کی منتیں کرنے کے بجائے فوری طور پر آئی سی سی سے رجوع کرنا چاہیے تھا: احسان مانی

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے سابق صدر احسان مانی نے پاک بھارت کرکٹ سیریز کے بارے میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے رویے پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس کی اس کمزوری کا فائدہ بھارتی کرکٹ بورڈ اٹھا رہا ہے۔

احسان مانی نے بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں کہا ’دنیا کا کوئی بھی کرکٹ بورڈ اس طرح سیریز کا آخر وقت تک انتظار نہیں کرتا جس طرح پاکستان کرکٹ بورڈ نے کیا ہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ نے بی سی سی آئی کی بار بار بی منتیں کرکے خود کو خراب کردیا ہے۔‘

ورلڈ ٹی 20 کا شیڈول جاری، پاکستان بھارت ایک گروپ میں

بھارتی جواب کے انتظار کے ساتھ ساتھ تیاریاں جاری

’پاکستان کے ساتھ کرکٹ کے روابط پر ابھی فیصلہ نہیں‘

احسان مانی نے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہر یار خان کے بارے میں کہا کہ جب انھوں نے یہ کہہ دیا تھا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ یکم دسمبر تک سیریز کا انتظار کرے گا تو پھر اس کے بعد انھیں حتمی فیصلہ کر لینا چاہیے تھا۔

’شہر یار خان جس طرح بار بار بیانات دے رہے ہیں انھیں اس بارے میں خود نہیں پتہ۔ دراصل وہ اپنی یہ خواہش رکھتے ہیں کہ یہ سیریز ہوجائے لیکن اب اس مرحلے پر اس سیریز کا پاکستان کو خاص فائدہ نہیں ہوگا اور یہ پاکستانی کرکٹرز کے ساتھ بھی زیادتی ہوگی جو ان دنوں کسی تیاری کے بجائے گھروں پر بیٹھے ہیں۔‘

احسان مانی نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ میں ایک واضح لیڈرشپ ہونی چاہیے اور سیریز کے بارے میں ٹھوس فیصلہ کرنا چاہیے کہ اب وقت نہیں رہا۔ ڈیڈ لائن کو آگے بڑھاتے رہنے کا کوئی فائدہ نہیں بلکہ اس کا نقصان پاکستان کی کرکٹ کو ہی ہوگا۔

احسان مانی نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو بیانات بازی اور بھارتی کرکٹ بورڈ کی منتیں کرنے کے بجائے فوری طور پر آئی سی سی سے رجوع کرنا چاہیے تھا کہ کیونکہ یہ معاملہ سراسر حکومتی مداخلت کا ہے۔

انھوں نے یاد دلایا کہ آئی سی سی نے سری لنکا کے نمائندے کو باربیڈوس میں ہونے والے اپنے اجلاس میں صرف آبزرور کی حیثیت سے بیٹھنے کی اجازت دی تھی کیونکہ اس کا خیال تھا کہ سری لنکن کرکٹ میں حکومتی مداخلت ہوئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاک بھارت کرکٹ کے معاملے میں بھارتی حکومت کی مداخلت واضح ہے کہ دونوں کرکٹ بورڈز نے کھیلنے کی مفاہمت پر دستخط کر رکھے ہیں لیکن بھارتی حکومت اس میں مداخلت کر رہی ہے۔

اسی بارے میں