چیلسی فٹ بال کلب کے مینیجر مورینو برطرف

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

برطانوی فٹ بال کلب چیلسی نے پریمیئر لیگ جیتنے کے سات ماہ بعد مینیجر ہوزے مورینو کو برطرف کردیا ہے۔

52 سالہ مورینو نے جون 2013 میں کلب کے مینیجر کا عہدہ دوسری بار سنبھالا تھا۔

چیلسی کو ایک اور شکست، ہوزے مورینو مشکل میں

چیمپیئنز لیگ میں انگلش ٹیموں کو کیا ہوا؟

پچھلے سیزن میں چیلسی نے آٹھ پوائنٹس کی واضح برتری سے پریمیئر لیگ جیتی تھی۔ تاہم اس سیزن میں اب تک 16 میچوں میں سے نو میں شکست ہوئی ہے اور یہ کلب ٹیبل میں 16 ویں نمبر پر ہے۔

مورینو کا بطور چیلسی مینیجر آخری میچ پیر کو لیسٹر سٹی کے خلاف میچ تھا جس میں چیلسی کو 1-2 سے شکست ہوئی۔

مورینو کی برطرفی کے بعد چیلسی کے مالک رومن ابرامووچ نے نئے مینیجر کی تلاش شروع کر دی ہے۔

چیلسی کی جانب سے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ چیلسی کلب اور مورینو نے باہمی رضامندی سے راہیں جدا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

’2013 میں دوبارہ مینیجر بننے والے مورینو کی خدمات پر چیلسی میں تمام افراد ان کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔‘

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ’دو بار مینیجر رہنے کے عرصے میں ایف اے کپ، کمیونٹی شیلڈ اور تین لیگ کپ جیتنے پر وہ کلب کی 110 سالہ تاریخ کے سب سے کامیاب مینیجر بنے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA

’مورینو اور کلب کے بورڈ دونوں ہی اس بات پر متفق ہیں کہ اس سیزن میں ان کا کارکردگی اتنی اچھی نہیں ہے اور یہ دونوں کے لیے بہتر ہے کہ راہیں جدا کر لی جائیں۔‘

بی بی سی کے میچ آف دی ڈے کے ماہر ایلن شیرر کا کہنا ہے کہ وہ مورینو کی برطرفی پر دنگ رہ گئے ہیں لیکن یہ بھی درست ہے کہ کلب کی کارکردگی اتنی اچھی نہیں ہے۔

انگلینڈ اور آرسنل کلب کے سابق کھلاڑی مارٹن کیؤن کا کہنا ہے کہ مورینو کھلاڑیوں کو سنبھال نہیں پا رہے تھے اور کھلاڑی بھرپور انداز میں نہیں کھیل رہے تھے۔

’مینیجر اور کھلاڑیوں کے درمیان اعتماد اور عزت نہیں رہی تھی۔ آخر میں ایک شخص کو نکالنا آسان ہے بہ نسبت 22 کھلاڑیوں کے۔‘

اسی بارے میں