’مذہبی جذبات مجروح‘ کرنے پر دھونی کی عدالت میں طلبی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption عدالت نے دھونی کو 25 فروری کو عدالت میں پیش ہونے کا حکم دیا ہے

بھارت کی ریاست آندھرا پردیش کی ایک عدالت نے ون ڈے کرکٹ ٹیم کے کپتان مہندر سنگھ دھونی کو عدالت میں پیش ہونے کے لیے وارنٹ جاری کیے ہیں۔

بھارت کی سرکاری خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق عدالت کی جانب سے یہ قدم مہندر دھونی کے خلاف ہندوؤں کے مذہبی جذبات مجروح سے متعلق ایک درخواست پر اٹھایا ہے۔

اننت پور کے عدالت میں گوپال رائے اور شیام کی شکایت کی بنیاد پر دھونی کے خلاف وارنٹ جاری کیا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق درخواست گزاروں کا تعلق دائیں بازو کی ہندو جماعت سے ہے۔

گذشتہ برس دونوں نے ایک کاروباری جریدے کے سروق پر دھونی کی ایک تصویر شائع ہونے پر عدالت میں شکایت کی تھی۔

اس تصویر میں مہندر دھونی کو ہندو دیوتا کے اوتار میں دکھایا گیا تھا۔

اس تصویر میں دھونی کے کئی ہاتھ دکھائے گئے تھے اور ان میں ایک ہاتھ میں وہ جوتا تھامے ہوئے تھے جبکہ تصویر کا عنوان تھا’بڑی ڈیلز کا خدا‘۔

درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ اس تصویر سے ہندوؤں کے مذہبی جذبات مجروح ہوئے ہیں۔

عدالت نے دھونی کو 25 فروری کو عدالت میں پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔

دھونی اس وقت ایک روزہ اور ٹی ٹوئنٹی میچوں کی سیریز کے لیے آسٹریلیا میں موجود ہیں اور وہاں31 جنوری تک رہیں گے۔

اسی بارے میں