محمد عامر کی آمد پر ’کیش رجسٹر‘ کی آواز چلانے پر اناؤنسر کی سرزنش

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے پاکستان کے خلاف تیسرے ٹی ٹوئنٹی میچ کے دوران محمد عامر کو طعنہ دینے پر ویسٹ پیک کرکٹ گراؤنڈ کے سٹیڈیم اناؤنسر کی سرزنش کی ہے۔

کرک انفو کے مطابق ویسٹ پیک کرکٹ گراؤنڈ کے لمبے عرصے سے اناؤنسر مارک نے اس وقت ’کیش رجسٹر‘ کے کھلنے کی آواز سٹیڈیم میں چلائی جب سپاٹ فکسنگ کے جرم میں پانچ سال کی پابندی ختم ہونے کے بعد فاسٹ بولر محمد عامر بیٹنگ کرنے آئے۔

نیوزی لینڈ کرکٹ کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر ڈیوڈ وائٹ نے اس عمل پر پاکستان سے معذرت کی ہے اور سرعام مارک کی سرزنش کی۔

ڈیوڈ وائٹ نے فیئر فیکس سے بات کرتے ہوئے کہا ’میرے خیال میں ایسی آواز چلانی نامناسب اور ہتک آمیز تھی۔ میں نے پاکستانی ٹیم مینجمنٹ سے رابطہ کیا ہے اور معافی مانگی ہے اور یقین دہانی کرائی ہے کہ ایسا آئندہ نہیں ہوگا۔‘

نیوزی لینڈ میں محمد عامر کا پرتپاک استقبال نہیں کیا گیا۔ ایڈن گارڈن میں ان کا اچھا استقبال کیا لیکن چند افراد نے ان کےگراؤنڈ میں آمد پر ہوٹنگ کی۔

پاکستانی ٹیم نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ پہلے ایک روزہ میچ کے دوران ایک شخص نے محمد عامر کو رقم اور جیولری دکھائی۔ اس موقعے پر محمد حفیظ نے اس شخص کے بارے میں ٹیم کی سکیورٹی ٹیم کو مطلع کیا تھا۔ سکیورٹی ٹیم نے اس شخص کو ایسا کرنے سے منع کیا۔

تاہم پاکستانی ٹیم کا کہنا ہے کہ محمد عامر کو اس شخص کی حرکت کے بارے میں علم نہیں ہوا تھا۔

اسی بارے میں