جنوبی ایشیائی کھیلوں میں پاکستان کے چار طلائی تمغے

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption دائیں جانب پاکستان کے عبدالغفور نے 56 کلوگرام کٹیگری میں کانسی کا تمغہ حاصل کیا

پاکستانی کھلاڑیوں نے عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے بھارت کے شہر گوہاٹی میں جاری 12ویں جنوبی ایشیائی کھیلوں میں چار طلائی تمغے جیت لیے ہیں۔

پاکستانی پہلوانوں کی کارکردگی سب سے نمایاں رہی ہے جنھوں نے کشتی کے مقابلوں میں دو طلائی، چار نقرئی اور ایک کانسی کا تمغہ حاصل کیا ہے۔

پاکستان نے آٹھ پہلوانوں کے نام بھیجے تھے لیکن ایک پہلوان کو ویزا نہ مل سکا تاہم شریک تمام کے تمام سات پہلوان تمغے حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئے۔

زمان انور نے 125 کلوگرام کیٹگری میں کامیابی حاصل کی جبکہ انعام بٹ نے 86 کلوگرام میں طلائی تمغہ جیتا۔

انعام بٹ کا بھارتی سرزمین پر یہ دوسرا گولڈ میڈل ہے۔ اس سے قبل انھوں نے 2010 ء میں دولتِ مشترکہ کھیلوں میں بھی طلائی تمغہ جیتا تھا۔

پاکستان کے ناصر اقبال نے سکواش کے فائنل میں ہم وطن فرحان زمان کو شکست دے کر گولڈ میڈل حاصل کیا۔ تاہم پاکستان کی خاتون کھلاڑی ماریہ طور فائنل میں بھارت کی جوشنا چنپّا سے ہارگئیں۔

تیراکی میں پاکستان کی لیانا کیتھرین سوان نے دو سو میٹرز بریسٹ سٹروک میں طلائی تمغہ جیت لیا۔

خواتین کی دو سو میٹرز فری سٹائل میں پاکستان کی کرن خان ساتویں نمبر پر آئیں۔

مردوں کی دوسو میٹرز فری سٹائل میں پاکستان کے اسرار حسین چھٹے نمبر پر آئے۔

مردوں کی چار ضرب سو میٹرز ریلے میں پاکستانی تیراک چوتھی پوزیشن حاصل کر پائے۔

تمغوں کی دوڑ میں اس وقت بھارت آگے ہے جس نے ابھی تک مجموعی طور پر سونے کے40 تمغے جیتے ہیں۔

سری لنکا کے جیتے ہوئے طلائی تمغوں کی تعداد آٹھ ہے۔

پاکستان نے چار طلائی تمغوں کے علاوہ ابھی تک چاندی کے دس اور کانسی کے 11 تمغے جیتے ہیں۔

اسی بارے میں