ورلڈ ٹی 20 میں پہلی بار خواتین امپائرز

تصویر کے کاپی رائٹ ICC

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے اگلے ماہ آٹھ مارچ سے بھارت میں شروع ہونے والے ورلڈ ٹی 20 کے عالمی کپ کے لیے مقرر کردہ امپائرز میں پہلی بار دو خواتین کو شامل کیا ہے۔ ان میں نیوزی لینڈ کی کیتھلین کراس اور آسٹریلیا کی کلیری پولاسک شامل ہیں۔

آئی سی سی کی مضبوط کنٹرول ٹیم میں میچ ریفرییوں کے امارات ایلیٹ پینل کے تمام سات اور آئی سی سی امپائرز کی امارات انٹرنیشنل پینل کے 12 ارکان کے ساتھ ساتھ آئی سی سی کے امارات انٹرنیشنل پینل کے دس اور آئی سی سی کے ایسوسی ایٹ اور بین الاقوامی ایمپائر کے الحاق پینل کے دو ارکان شامل ہیں۔

آئی سی سی کی جانب سے مقرر کیے گئے میچ آفیشلز میں ڈیوڈ بون، کرس براڈ، جیف کرو، رانجن مدوگالے، اینڈی کرافٹ، رچی رچرڈسن اور جواگل سری ناتھ شامل ہیں۔

آئی سی سی کی جانب سے مقرر جانے والے امپائروں میں انیل چوہدری، جوہان کلوٹ، کیتھلین کراس، علیم ڈار، کمار دھرما سینا، مرائس ایراسمس، سائمن فرائی، کرس گفانی، ائین گولڈ، رچرڈ ایلنگ ورتھ، رچرڈ کیٹل بورو، ونیت کلکرنی، نائجل لانگ، رنمور مارٹینز، سی کے نندان، بروس اوکسن فورڈ، کلیری پولاسک، پال رائفل، روی سندارام، راڈ ٹسکر اور جوئل ویلسن شامل ہیں۔

آئی سی سی امپائر کے پینل میں نیوزی لینڈ کی کیتھلین کراس اور آسٹریلیا کی کلیری پولاسک بھی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ یہ دونوں خواتین امپائرز آئی سی سی خواتین ٹی 20 کے عالمی کپ اور سنہ 2015 میں تھائی لینڈ میں ہونے والے کوالیفائر راؤنڈ میں بھی شامل تھیں۔

آئی سی سی کے مطابق ان خواتین کی آئی سی سی خواتین ٹی 20 کے عالمی کپ میں تقرری اس بات کا ثبوت ہے کے کرکٹ کا بین الاقوامی ادارہ اس بات کو اہمیت دیتا ہے کہ کرکٹ سب کے لیے ہے اور اسے امید ہے کہ اس اقدام سے مستقبل میں مزید خواتین اس کا حصہ بنیں گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ icc

نیوزی لینڈ کی کیتھلین کراس 16 مارچ کو بھارتی شہر چنائی میں آئی سی ورلڈ ٹی 20 ٹورنامنٹ میں پاکستان اور بنگلہ دیش کی خواتین کرکٹ ٹیموں کے درمیان کھیلے جانے والے ایک میچ میں امپائرنگ کر کے تاریخ رقم کریں گی۔ وہ یہ میچ سپروائز کرنے والی پہلی خاتون امپائر ہوں گی۔ اس میچ میں ان کا ساتھ انیل چوہدری دیں گی۔

آسٹریلیا کی کلیری پولاسک 18 مارچ کو نیوزی لینڈ اور ائر لینڈ کی خواتین کرکٹ ٹیموں کے درمیان کھیلے جانے والے میچ میں امپائرنگ کریں گے۔ اس میچ میں ان کا ساتھ ونیت کلکرنی دیں گی۔

نیوزی لینڈ میں پیدا ہونے والی کیتھلین کراس کو سنہ 2014 میں آئی سی سی کے ایسوسی ایٹ اور ایفیلیٹ پینل آف انٹرنیشنل امپائرز پینل میں شامل کیا گیا تھا۔

انھوں نے آئی سی سی خواتین کے سنہ 2000، 2009 اور 2013 کے عالمی مقابلوں کے علاوہ سنہ 2011 کے خواتین کے کوالیفائر مقابلوں کے علاوہ سنہ 2013 اور 2015 کے آئی سی سی خواتین کے ٹی 20 مقابلوں میں بھی شرکت کی تھی۔

کیتھلین کراس نے حالیہ برسوں میں مردوں کے سینئیر ایونٹس جس میں آئی سی سی ورلڈ کرکٹ کی چیمپیئن شب ڈویژن تین اور پانچ کے لیے بھی کام کیا تھا۔

آسٹریلیا کی کلیری پولاسک نے حالیہ دنوں میں اس وقت تاریخ رقم کی جب انھیں مٹا ڈور کے ایک روزہ میچ میں تھرڈ امپائر مقرر کیا گیا۔ وہ آسٹریلیا میں ہونے والے ’اے لسٹ‘ میں شامل ہونے والی پہلی خاتون تھیں۔

کلیری پولاسک سنہ 2015 میں بینکاک میں منعقد ہونے والی آئی سی سی خواتین ٹی 20 کے کوالیفائر راؤنٹ میں شامل ہونے والی دنیا کی کم عمر ترین آئی سی سی اہلکار تھیں۔

.

اسی بارے میں