’فٹ بال میں ویڈیو ریفری کا استعمال جلد ہوگا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فیفا کے نو منتخب صدر جیانی انفینٹینو کے خیال میں کھیل میں ٹیکنالوجی کا استعمال ناگزیر ہے

فٹ بال میں ’میچ تبدیل کر دینے والے فیصلوں‘ کے لیے ویڈیوز کی مدد سے فیصلے کرنے والے ریفریز کے استعمال کے لیے تجربات کے آغاز میں 18-2017 کے سیزن سے مزید تاخیر نہیں ہوگی۔

ٹیکنالوجی کا اطلاق صرف میچ کے دوران پیش آنے والے اہم واقعات جیسے گول، ریڈ کارڈز، غلط شناخت اور پینلٹیز پر ہوگا۔

انٹرنیشنل فٹ بال ایسوسی ایشن بورڈ (آئی ایف اے بی) کا کہنا ہے کہ وہ براہ راست تجربات کی 12 ملکی ایسوسی ایشنز اور ایک کانفیڈریشن میں میزبانی کرنے میں دلچسپی رکھتا ہے۔

اس خبر کا اعلان کارڈف میں ہونے والی آئی ایف اے بی کی ملاقات کے بعد کیا گیا ہے۔

فٹ بال کی عالمی تنظیم فیفا کے نو منتخب صدر جیانی انفینٹینو کے خیال میں کھیل میں ٹیکنالوجی کا استعمال ناگزیر ہے۔

جیانی انفینٹینو کا کہنا ہے کہ ’یہ کھیلوں کے لیے تاریخی دن ہے اور اس فیصلے سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ کھیلوں کے لیڈرز فٹ بال کی سن رہے ہیں۔‘

آئی ایف اے بی اور فیفا کا کہنا ہے کہ اس ٹیکنالوجی کی منظوری کا حتمی فیصلہ مسلسل تجربات کرنے اور اس کے استعمال کے پروٹوکول پر معاہدے کے بعد کیا جائے گا۔

یانی انفینتیو نے کہا: ’ہم مستقبل کے لیے اپنی آنکھیں بند نہیں کر سکتے ہیں لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ یہ کام کرے گا۔‘

’گیم کی روانی اہم ہے۔ ہمیں اسے خطرے میں نہیں ڈال سکتے۔ اسی لیے ہمیں تجربات کرنے ہوں گے۔‘

اسی بارے میں