پاکستان ویمن ٹیم کو چار رن سے شکست

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ویسٹ انڈیز کی بولر انیسا محمد نے تین پاکستانی کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا

ویسٹ انڈیز کی خواتین کرکٹ ٹیم نے پاکستان کی خواتین کرکٹ ٹیم کو ورلڈ ویمنز ٹی20 کرکٹ ورلڈ کپ میچ میں ایک سنسنی خیز مقابلے کے بعد چار رنز سے شکست دے دی۔

ویسٹ انڈیز نے پاکستان کو جیت کے لیے 104 رن کا ہدف دیا۔ تاہم پاکستانی ویمن ٹیم کی بلے باز 20 اووروں میں پانچ وکٹوں کے نقصان پر 99 رنز ہی بنا سکیں اور اس طرح وہ یہ میچ چار رنز سے ہار گئیں۔

پاکستان کی طرف سے اننگز کا آغاز اوپنر بسما معروف اور جویریا خان نے کیا۔ تاہم جویریا خان سر میں گیند لگنے سے زخمی ہوگئیں اور وہ کھیل جاری نہ رکھ سکیں۔ جویریہ کو بعد میں ہسپتال منتقل کردیاگیا۔

ون ڈاؤن آنے والی کھلاڑی سدرا امین نے بسما معروف کا ساتھ دیا اور دونوں کھلاڑیوں نے تحمل سے ٹیم کا سکور آگے بڑھانا شروع کیا اور آٹھویں اوور تک ٹیم کا سکور 40 تک پہنچا دیا۔

پاکستان کی پہلی وکٹ نویں اوور 40 کے سکور پر گری جب سدرہ امین 20 رن بنا کر انیسا محمد کی گیند پر ایفی فلیچر کے ہاتھوں کیچ ہوگئیں۔ پاکستان کی آنے والی دو بلے باز مجموعی سکور میں صرف چار رن کا اضافہ کرسکیں اور 44 کے سکور پر پاکستان کی تین کھلاڑی آوٹ ہوگئیں تھیں۔

اس موقع پر منیبا علی نے کپتان ثنا میر کے ساتھ پانچویں وکٹ کی شراکت میں 27 رن سکور کیے لیکن وہ تیزی سے سکور میں اضافہ کرنے میں ناکام رہیں۔اکہتر کے مجموعی سکور پر منیبا علی پندرہ رن بنا کر کوئنٹن کی گیند پر کونیل کے ہاتھوں کیچ ہوگئیں۔ اس موقع پر آل راؤنڈر اسماویہ اقبال میدان میں آئیں اور تیزی سے سکور کرنا شروع کیا لیکن دوسرے طرف سے کپتان ثنا میر رنز کی رفتار کو برقرار رکھنے میں کامیاب نہ ہو سکیں۔

اسماویہ اقبال نے ایک چھکے کی مدد سے 16 گیندوں پر 19 رن بنائے۔ پاکستان کو آخری دو اوور میں 23 رن درکار تھے۔ انیسویں اوور میں پاکستان نے 12 رن بنائے اور آخری اوور میں اسے 11 رن درکار تھے لیکن وہ صرف سات رنز ہی بناسکیں۔

ویسٹ انڈیز کی طرف سے انیسا محمد نے میچ وننگ سپیل کروایا، انھوں نے چار اوور میں 25 رن دے کر تین پاکستانی کھلاڑیوں کو پویلین کا راستہ دکھایا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption پاکستان کی طرف سے بسما معروف اور سدرا امین نے اننگز کا آغاز کیا۔

اس سے قبل پاکستان کی خواتین کرکٹ ٹیم نے ٹاس جیت کر ویسٹ انڈیز کی ٹیم کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی۔ ویسٹ انڈیز کی طرف سے میتھیوز اور ٹیلر نے اننگز کا آغاز کیا۔

ویسٹ انڈیز کو پہلا نقصان چھٹے اوور میں ہوا جب میتھیوز 15 رن بنا کر آؤٹ ہوگئیں۔ اس وقت ویسٹ انڈیز کا سکور 28 تھا۔

ویسٹ انڈیز کی اگلے دو بلے باز سکور میں خاطر خواہ اضافہ نہ کرسکیں اور 37 کے مجموعی سکور پر ان کے تین بلے باز پویلین واپس جاسکے تھے۔ چوتھے نمبر پر آنے والی ملیسا آگیلیرا نے کپتان اور اوپنر سٹیفنی ٹیلر کا ساتھ دیا اور دونوں کھلاڑی سکور پندرویں اوور میں 72 تک پہنچا دیا۔

اس موقع پر ٹیلر کو پاکستانی سپنر انعم امین کا دوسرا شکار بنیں۔ کریز پر نئی آنے والی کھلاڑی برٹنی کوپر اسی اوور کی پانچویں گیند پر ایک رن بنا کر رن آؤٹ ہوگئیں۔

سٹیسی کنگ اور شیمیئن کیمپبل نے ساتویں وکٹ کی شراکٹ میں 21 رن کا اضافہ کیا۔ کنگ 12 رن بنا کر ناٹ آؤٹ رہیں جبکہ کیمپبل کو 14 کے سکور پر انعم امین نے آٰٹ کیا۔ ویسٹ انڈیز نے آٹھ وکٹوں کے نقصان پر 103 رن بنائے۔

پاکستان کی طرف سے انعم امین نے چار اوور میں سولہ رن دے کر چار کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا جبکہ سعدیہ یوسف نے تین اوور میں 14 رن دے کر دو کھلاڑیوں کی وکٹیں لیں۔

پاکستانی بولرز کی کارکرگی عمدہ رہی اور انھوں نے ویسٹ انڈیز کی بیٹسمینوں کو کھل کر نہیں کھیلنے دیا۔