ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں جنوبی افریقہ کی پہلی کامیابی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption محمد شہزاد کو مورس نے بولڈ کیا

آئی سی سی ورلڈ ٹی20 سپر 10 مرحلے میں ممبئی میں کھیلے جانے والے میچ میں جنوبی افریقہ نے افغانستان کو 37 رنز سے شکست دے دی۔

جنوبی افریقہ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ مقررہ 20 اوورز میں جنوبی افریقہ نے پانچ کھلاڑیوں کے نقصان پر 209 رنز سکور کیے۔

جواب میں افغانستان کی ٹیم 172 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی۔

افغانستان کی جانب سے شہزاد نے 18 گیندوں میں تین چوکوں اور پانچ چھکوں کی مدد سے 44 رنز بنائے۔

ان کے علاوہ نور علی زدران نے 25، گلبدین نائب 26 اور سمیع اللہ شنواری نے 25 رنز سکور کیے۔

میچ کی تصاویر

افغانستان کی پہلی وکٹ چوتھے اوور میں گری جب مورس نے محمد شہزاد کو بولڈ کیا۔ شہزاد نے 18 گیندوں میں تین چوکوں اور پانچ چھکوں کی مدد سے 44 رنز بنائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption شہزاد نے 18 گیندوں میں تین چوکوں اور پانچ چھکوں کی مدد سے 44 رنز بنائے

مورس نے اصغر کو آؤٹ کیا۔ انھوں نے سات رنز بنائے جس میں ایک چھکا شامل ہے۔ اس اوور میں صرف چار رنز سکور ہوئے۔

گلبدین نائب 26 رنز بنا کر آؤٹ ہونے والے اگلے کھلاڑی تھے۔ انھوں نے نور علی کے ساتھ تیسری وکٹ کی شراکت میں 31 گیندوں میں 45 رنز سکور کیے۔

عمران طاہر نے جنوبی افریقہ کو ایک اور کامیابی دلوائی جب انھوں نے نور علی کو آؤٹ کیا۔ نور علی نے 24 گیندوں میں 25 رنز سکور کیے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption 18 ویں اوور میں محمد نبی نے ڈی ویلیئرز کو آؤٹ کیا۔ انھوں نے 29 گیندوں میں چار چوکوں اور پانچ چھکوں کی مدد سے 64 رنز بنائے

عمران طاہر ہی نے جنوبی افریقہ کو ایک اور کامیابی دلوائی جب انھوں نے محمد نبی کو 11 رنز پر آؤٹ کیا۔

نجیب 12 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جبکہ سمیع اللہ شنواری 25 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

راشد خان صرف گیارہ بنا سکے جبکہ دولت زدران صفر اور شپور زدران ایک رن بنا کر آؤٹ ہوئے۔

ٹی ٹوننٹی مقابلے

افغانستان کا ریکارڈ

  • کھیلے 44

  • جیتے 28

  • ہارے 16

اس سے قبل جنوبی افریقہ کی جانب سے ڈی کاک نے 45، ڈو پلیسی نے 41 اور ڈی ویلیئرز نے 64 رنز بنائے اور ڈومینی نے 29 رنز سکور کیے۔

ڈی کاک نے جنوبی افریقہ کو عمدہ آغاز دیا اور پہلے اوور ہی میں تین چوکے مارے۔

دوسرے اوور میں بھی ڈی کاک نے جارحانہ کھیل پیش کیا اور مزید دو چوکے مارے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ڈی کاک نے 31 گیندوں چھ چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے میں 45 رنز بنائے

تیسرے اوور میں افغانستان کو اس وقت کامیابی ملی جب ہاشم آملہ پانچ گیندوں میں پانچ رنز بنا کر شپور زدران کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

افغانستان کو بڑی وکٹ دسویں اوور میں ملی جب امیر حمزہ کی گیند پر ڈوپلیسی سٹمپ ہوئے۔ انھوں نے 27 گیندوں میں سات چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 41 رنز سکور کیے۔

11 ویں اوور میں سمیع اللہ شنواری نے صرف دو رنز دیے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

12 ویں اوور میں ڈی کاک کو امیر حمزہ نے آؤٹ کر دیا۔ ڈی کاک نے 31 گیندوں چھ چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے میں 45 رنز بنائے۔

راشد خان نے 17 واں اوور کرایا جس کی پہلی گیند پر ڈی ویلیئرز نے چھکا، دوسری گیند پر چوکا، تیسری پر چھکا، چوتھی پر ایک اور چھکا، پانچویں پر ایک اور چھکا اور چھٹی گیند پر ایک رن بنایا۔ اس اوور میں 29 رنز بنے۔

18 ویں اوور میں محمد نبی نے ڈی ویلیئرز کو آؤٹ کیا۔ انھوں نے 29 گیندوں میں چار چوکوں اور پانچ چھکوں کی مدد سے 64 رنز بنائے۔

20 ویں اوور میں ملر 19 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption امیر حمزہ کی گیند پر ڈوپلیسی سٹمپ ہوئے۔ انھوں نے 27 گیندوں میں سات چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 41 رنز سکور کیے

افغانستان کی جانب سے امیر حمزہ، دولت زدران، شپور زدران اور محمد نبی نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

گروپ ون کی ان دونوں ٹیموں کے لیے یہ میچ انتہائی اہمیت رکھتا ہے کیونکہ افغانستان اور جنوبی افریقہ کی ٹیموں کو اپنے ابتدائی میچوں میں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

ٹی ٹوننٹی مقابلے

جنوبی افریقہ کا ریکارڈ

  • کھیلے 87

  • جیتے 52

  • ہارے 34

  • بے نتیجہ 1

جنوبی افریقہ انگلینڈ کے خلاف اپنے میچ میں ایک بڑا سکور تو کرنے میں کامیاب ہو گیا تھا لیکن وہ اس سکور کا دفاع نہیں کر پایا تھا اور اس کو دو وکٹوں سے شکست ہوئی تھی۔

دوسری جانب افغانستان کو اپنے پہلے میچ میں سری لنکا کے ہاتھوں ہار کا منہ دیکھنا پڑا تھا۔ سری لنکا نے تلکرتنے دلشان کی عمدہ اننگز کی بدولت یہ میچ چھ وکٹوں سے جیت لیا تھا۔

اس وقت گروپ ون میں جنوبی افریقہ چوتھے اور افغانستان پانچویں نمبر پر موجود ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

افغانستان کا سکواڈ : اصغر ستنکزئی، نور علی زدران، محمد شہزاد، عثمان غنی، محمد نبی، کریم صادق، شفیق اللہ، راشد خان، امیر حمزہ، دولت زدران، شاپور زدران، گلبدین نائب، سمیع اللہ شنواری، نجیب اللہ زدران، حامد حسن۔

جنوبی افریقہ کا سکواڈ : فاف ڈوپلیسی، کائل ایبٹ، ہاشم آملہ، فرحان بہاردین، کوئنٹن ڈی کاک، ابراہم ڈی ویلیئرز، جے پی ڈومینی، عمران طاہر، ڈیوڈ ملر، کرس مورس، ایرون فنگیسو، کگیسو ربادا، رائلی روسو،ڈیل سٹین، ڈیو ویز۔

اسی بارے میں