مرد باہر، کیا خواتین کچھ کر دکھائیں گی؟

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption گروپ بی سے سیمی فائنل کی دوڑ میں اب چار ٹیمیں باقی ہیں

ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے مردوں کے مقابلے میں تو پاکستان ٹیم کچھ نہیں کر پائی، تاہم ملک کی خواتین کو کھیلتے دیکھ کر پاکستانی عوام کے دل کو تھوڑی بہت تسلی اور حوصلہ مل رہا ہے۔ پاکستان کی خواتین کی کرکٹ ٹیم اس وقت گروپ بی میں ہے۔ ان کے گروپ میں انگلینڈ، بھارت، ویسٹ انڈیز اور بنگلہ دیش ہیں۔ بنگلہ دیش کی ٹیم ورلڈ کپ سے باہر ہوچکی ہے اور گروپ بی سے سیمی فائنل کی دوڑ میں اب چار ٹیمیں باقی ہیں۔ انگلینڈ، پاکستان، بھارت اور ویسٹ انڈیز۔ آیے نظر ڈالتے ہیں کے ان چاروں ٹیموں کی کیا صورتحال ہے۔

پاکستان:

پاکستانی ومین ٹیم نے اب تک تین میچ کھیلے ہیں جس میں سے ویسٹ انڈیز کے خلاف انھیں شکست ہوئی اور بھارت اور بنگلادیش کے خلاف انھوں نے اپنے میچوں میں کامیابی حاصل کی۔ اس طرع پاکستان کے 3 میچ کھیل کر چار پوائنٹ ہیں۔ پاکستان کا اگلا میچ اتوار کو انگلینڈ کے ساتھ ہے۔ اگر پاکستان یہ میچ واضع فرق سے جیت گیا تو پاکستان کا رن ریٹ بہتر ہوگا اور اس کے سیمی فائنل کھیلنے کے امکانات بڑھ جائیں گے۔

انگلینڈ:

انگلینڈ کی ٹیم ابھی تک کوئی میچ نہیں ہاری اور اس وقت سب سے مضبوط ٹیم اور پوزیشن ان ہی کی ہے۔ اگر انگلینڈ پاکستان سے جیت گیا تو وہ حتمی طور پر سیمی فائنل کھیلے گا۔ تاہم شکست کی صورت میں بھی انگلینڈ کے سیمی فائنل کھیلنے کے مواقع ضائع نہیں ہوں گے اور بات نیٹ رن ریٹ پر چلی جائے گی۔

ویسٹ انڈیز:

ویسٹ انڈیز کا اگلا میچ بھی اتوار کو ہے۔ انھوں نے پاکستان کی طرح تین میچ کھیل کر دو جیتے اور ایک ہارا ہے، تاہم ان کا رن ریٹ پاکستان سے بہتر ہے۔ اگر ویسٹ انڈیز ٹیم بھارت سے جیت جاتی ہے تو بھارت باہر ہوجائے گا۔ لیکن اگر ویسٹ انڈیز ٹیم ہار جاتی ہے اور دوسری طرف انگلینڈ پاکستان کو ہرا دیتا ہے تو بہتر رن ریٹ کی بدولت ویسٹ انڈیز انگلینڈ کے ہمراہ سیمی فائنل کھیل سکتی ہے۔

بھارت:

بھارت کی پوزیشن اس وقت سب سے کمزور ہے۔ بھارتی خواتین کی ٹیم کا حال اس وقت وہی ہے جو کہ پاکستان کی مردوں کی ٹیم کا کچھ دن پہلے تھا۔ اب تک تین میچوں میں انھوں نے صرف ایک میں فتح حاصل کی ہے۔ اگر بھارت ویسٹ انڈیز کو ہرا دیتا ہے تو اسے انھیں بہت بڑے فرق سے ہرانا ہوگا اور بھارت کو دعا کرنی ہوگی کہ پاکستان انگلینڈ سے ہار جائے۔ اس طرح بھارت کے بھی ویسٹ انڈیز اور پاکستان کی طرع چار چار پوائنٹس ہوجائیں گے اور بہتر رن ریٹ کی بنا پر وہ انگلینڈ کے ہمراہ سیمی فائنل میں چلا جائے گا۔

اسی بارے میں