’ورلڈ کپ براہ راست کھیلنا ہے تو بڑی ٹیموں کو ہرانا ہوگا‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption اظہرعلی کو گذشتہ سال ورلڈ کپ کے بعد مصباح الحق کی جگہ پاکستان کا ون ڈے کپتان مقرر کیا گیا تھا

آئی سی سی کی عالمی ون ڈے رینکنگ میں پاکستانی ٹیم کی نویں پوزیشن نے ون ڈے کپتان اظہرعلی کو بھی فکر مند کر دیا ہے اور ان کا کہنا ہے کہ اگر پاکستانی ٹیم کو اگلا ورلڈ کپ براہ راست کھیلنا ہے تو اسے بڑی ٹیموں کو ہرانا ہو گا۔

واضح رہے کہ آئی سی سی نے بدھ کے روز جو نئی عالمی ون ڈے رینکنگ جاری کی ہے اس میں پاکستان کی پوزیشن نویں ہے۔

انگلینڈ میں 2019 میں ہونے والے ورلڈ کپ میں صف اول کی آٹھ ٹیمیں براہ راست حصہ لیں گی جبکہ دو ٹیموں کا انتخاب کوالیفائنگ راؤنڈ کے ذریعے ہوگا۔

براہ راست کھیلنے والی ٹیمیں وہ ہوں گی جو 30 ستمبر 2017 تک عالمی رینکنگ میں پہلی آٹھ پوزیشنوں پر ہوں گی۔

اظہرعلی کا کہنا ہے کہ عالمی رینکنگ میں پاکستان کا نویں نمبر پر ہونا فکرمندی کی بات ہے جس کا انھیں احساس ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستانی ٹیم کو اب بڑی ٹیموں کو ہرانا ہو گا اسی صورت میں اس کی رینکنگ بہتر ہو سکتی ہے۔

پاکستان کی ون ڈے ٹیم کے کپتان اظہر علی نے مزید کہا کہ ’پاکستانی ٹیم نے نیوزی لینڈ میں جیتنے کا اچھا موقع ضائع کیا۔ انگلینڈ کی ٹیم کو اسی کے میدانوں میں ہرانا آسان نہیں، یہ یقیناً بہت بڑا چیلنج ہو گا، لیکن یہی وقت ہے کہ بڑی ٹیموں کو ہرا کر ہی رینکنگ کو بہتر کیا جا سکتا ہے۔‘

اظہرعلی کو یقین ہے کہ نئی سلیکشن کمیٹی اور نئے کوچ کے آنے سے اچھی منصوبہ بندی ہو گی اور ٹیم کی کارکردگی میں بہتری آئے گی۔

یاد رہے کہ اظہرعلی کو گذشتہ سال ورلڈ کپ کے بعد مصباح الحق کی جگہ پاکستان کا ون ڈے کپتان مقرر کیا گیا تھا۔

ان کی قیادت میں پاکستانی ٹیم زمبابوے اور سری لنکا کے خلاف ون ڈے سیریز جیتنے میں کامیاب ہوئی تھی، جبکہ اسے بنگلہ دیش، انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے خلاف سیریز میں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

اسی بارے میں