عالمی ہیوی چیمپئن ٹائسن فیوری پر پابندی کا مطالبہ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ٹائسن فیوری گذشتہ برس نومبر میں ہیوی ویٹ باکسر ویلادمیئر کلیچکو کو رہا کر ہیوی ویٹ چیمپئن بنے تھے

یہودی مخالف جذبات کو بڑھنے سے روکنے کے لیے بنائی گئی تنظیم’ کیمپئن ایگینسٹ اینٹی سیمیٹزیم‘ نے مطالبہ کیا ہے کہ عالمی ہیوی ویٹ چیمپئن ٹائیسن فیوری پر پابندی عائد کی جائے۔

گذشہ ہفتے یوٹیوب پر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو میں ٹائیسن فیوری کو ہم جنس پرستوں، عورتوں اور یہودی مخالف باتیں کرتے ہوئے سنا جاسکتا ہے۔

57 منٹ دورانیے کی اس ویڈیو میں ٹائیسن فیوری نے جانوروں کے ساتھ سیکس، بچوں کے ساتھ بد فعلی اور خواتین کے حوالے سے اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے۔

تنیظم کے ترجمان جوناتھن کے بقول ’ یہ پہلا موقع نہیں ہے جب ٹائیسن نے نسل پرستانہ اور دل آزاری کاباعث بننے والی گفتگو کی ہو۔‘

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’ایسے رویے کی وجہ سے ٹائیسن کے سپانسرز کو چاہیے کہ وہ ان سے معاہدے ختم کر دیں، برطانیہ میں نسل پرستی کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔‘

برطانیہ میں باکسنگ کے معاملات کے ذمہ دار ادارے ’برٹش باکسنگ بورڈ ‘ نے تاحال اس حوالے کوئی ردِ عمل ظاہر نہیں کیا ہے۔

یاد رہے کہ ٹائیسن فیوری گذشتہ برس نومبر میں ہیوی ویٹ باکسر ویلادمیئر کلیچکو کو رہا کر ہیوی ویٹ چیمپئن بنے تھے۔

اس سے قبل ان کی جانب سے دیے گئے متنازع بیانات کے خلاف ایک لاکھ افراد نے آن لائن پٹیشن پر دسخط کر کے مطالبہ کیا تھا کہ ان کا نام بی بی سی کی جانب سے سنہ 2015 کے لیے منتخب کی گئی کھیلوں کی شخصیات کی فہرست سے نکلا جائے۔

.

اسی بارے میں