محمد عامر نے برطانوی ویزے کی درخواست دیدی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption پاکستان کرکٹ بورڈ کو عامر کے ویزے کے لیے اس لیے بھی امید ہے کہ کامن ویلتھ ممالک میں شامل نیوزی لینڈ انہیں ویزا جاری کرچکا ہے

سپاٹ فکسنگ میں سزا یافتہ فاسٹ بولر محمد عامر نے برطانوی ویزے کی درخواست دے دی ہے۔ انھوں نے یہ درخواست اسلام آباد میں برطانوی سفارتخانے میں جمع کرائی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کو توقع ہے کہ پیر یا منگل تک محمد عامر کو برطانوی ویزا جاری کردیا جائے گا اور وہ پاکستانی ٹیم کے ساتھ انگلینڈ کا دورہ کرسکیں گے۔

* ’یہی سیکھا ہے کہ بس ہمت نہیں ہارنی‘

واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے محمد عامر کے معاملے میں علیحدہ سے درخواست دیے جانے کا طریقہ کار اختیار کیا اور ان کا پاسپورٹ دیگر کھلاڑیوں کےساتھ ویزے کے لیے نہیں بھیجا گیا تھا۔ بورڈ نہیں چاہتا تھا کہ محمد عامر کے ویزے کی درخواست برطانوی سفارتخانہ عام انداز میں دیکھے اور ان کے ماضی کو دیکھتے ہوئے اسے مسترد کردے جس کا سبب 2010 میں انگلینڈ میں ان کا اسپاٹ فکسنگ کا ارتکاب کرنا اور لندن کی عدالت سے سزایافتہ ہونا ہے۔

شہریار خان نے جمعرات کو بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں کہا تھا انہیں محمد عامر کو ویزا دیے جانے کے معاملے میں مثبت اشارے ملے ہیں۔

شہریار خان نے یہ بھی کہا تھا کہ محمد عامر کے ویزے کے لیے انھوں نےخاص طور پر برطانوی ہائی کمشنر کو بھی خط تحریر کیا ہے جس میں یہ کہا گیا ہے کہ محمد عامر کا معاملہ خاص توجہ کا متقاضی ہے لہذا اس پر ہمدردانہ غور کیا جائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیرمین کے مطابق محمد عامر کو ایک علیحدہ فارم بھرنا پڑا ہے جس میں انہیں عدالت کی جانب سے سزا کے بارے میں سوالات کے جوابات دینے تھے جو انھوں نے دے دیے ہیں

شہریارخان کا کہنا تھا کہ انگلینڈ کرکٹ بورڈ بھی محمد عامر کے ویزے کے معاملے میں اپنا کردار ادا کررہا ہے اور وہ ہوم آفس سے رابطے میں ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین کے مطابق محمد عامر کو ایک علیحدہ فارم بھرنا پڑا ہے جس میں انہیں عدالت کی جانب سے سزا کے بارے میں سوالات کے جوابات دینے تھے جو انھوں نے دے دیے ہیں۔

واضح رہے کہ محمد عامر کو اپنے دیگر دو ساتھی کرکٹرز سلمان بٹ اور محمد آصف کے ساتھ اسپاٹ فکسنگ میں ملوث ہونے کی پاداش میں نہ صرف آئی سی سی کی طرف سے پانچ سالہ پابندی کا سامنا کرنا پڑا تھا بلکہ لندن کی عدالت نے بھی انہیں چھ ماہ قید کی سزا بھی سنائی تھی۔

محمد عامر پابندی مکمل ہونے کے بعد دوبارہ پاکستانی ٹیم میں شامل ہوئے ہیں اور نیوزی لینڈ بنگلہ دیش اور بھارت جاچکے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کو عامر کے ویزے کے لیے اس لیے بھی امید ہے کہ کامن ویلتھ ممالک میں شامل نیوزی لینڈ انہیں ویزا جاری کرچکا ہے۔

اسی بارے میں