یورو 2016: ہنگری، بیلجیئم، اور پرتگال سے جواب طلبی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پرتگال کے فٹبال مداح میچ کے دوران میدان میں گھس آئے تھے

یورپی فٹبال ایسوسی ایشن (يوئیفا) نے یورو 2016 مقابلوں کے دوران پیش آنے والے واقعات کے تناظر میں ہنگری، بیلجیئم اور پرتگال کے فٹبال ایسوسی ایشنز پر الزامات عائد کیے ہیں۔

یہ الزامات ان ممالک کے شائقین کے خراب رویوں اور ہنگامہ آرائی کی وجہ سے لگائے گئے ہیں۔

ہنگری کے حامیوں پر ہجوم میں بےچینی پیدا کرنے، آتش بازی کرنے اور آئس لینڈ کے ساتھ ڈرا ہونے والے میچ کے دوران میدان پر مختلف چیزیں پھینکنے کے الزامات لگائے گئے ہیں۔

بیلجیئم پر آئرلینڈ کے خلاف جیتے جانے والے میچ کے دوران اس کے شائقین کی جانب سے آتش بازی اور میدان میں چیزیں پھینکنے کے الزامات لگائے گئے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ہنگری کے معاملے پر سماعت 21 جون کو ہوگی

اس کے علاوہ پرتگال کے شائقین پر آسٹریا کے خلاف ڈرا ہونے والے میچ میں میدان میں اتر آنے کا الزام لگایا گيا ہے۔

ہنگری کے معاملے پر 21 جون کو سماعت ہوگی جبکہ دیگر دو تنظیموں کی سماعت کے لیے ابھی تاریخ کا تعین نہیں کیا گیا ہے۔

یہ واضح نہیں کہ 17 جون کو سینٹ ایٹینے میں جمہوریہ چیک کے خلاف 2-2 سے ڈرا ہونے والے ميچ کے آخری مرحلے میں کروئیشیا کے شائقین کی جانب سے رخنہ ڈالنے اور اسے متاثر کرنے کے سبب کروئشیا کو سزا دی جائے گی یا نہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پیر کو کروئشیا کے معاملے پر فیصلے سنایا جائے گا

ریفری مارک كلیٹنبرگ کو میدان پر آتش بازی پھینکنے کی وجہ سے کچھ دیر کے لیے کھیل کو روکنا پڑا تھا۔

ان میں سے ایک پٹاخہ ایک اہلکار کے پاس پھٹا جو اسے ہٹانے کی کوشش کر رہا تھا۔

اس سے قبل فرانس میں جاری یورو کپ ٹورنامنٹ میں روس کی فٹبال یونین پر ڈیڑھ لاکھ یورو کا جرمانہ عائد کیا جا چکا ہے۔

اس کے ساتھ ساتھ یوئیفا نے روس اور انگلینڈ کو خبردار کیا ہے کہ مارسیے میں دونوں ٹیموں کے درمیان میچ کے دوران جو پرتشدد واقعات ہوئے تھے اگر ویسا دوبارہ ہوتا ہے تو انھیں نااہل قرار دیا جائے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption روس اور انگلینڈ کو خبردار کیا گیا ہے کہ انھیں ٹورنامنٹ سے نکالا جا سکتا ہے

اسی بارے میں