روسی اتھیلیٹس کی اولمپکس میں شرکت، فیصلہ 21 جولائی کو

روس کے اتھلیٹس جو غیر قانونی ادوایات استعمال کرنے کے الزام سے انکار کرتے ہیں انھیں برازیل کے شہر ریو میں ہونے والے اولمپکس مقابلوں سے صرف پندرہ دن پہلے پتا چلے گے کہ وہ کھیلوں میں حصہ لے سکیں گے یا نہیں۔

کھیلوں کے تنازعات کے حل کے لیے ثالثی کی عدالت نے کہا کہ وہ اتھلیٹ اور اتھلیٹکس کی گورننگ باڈی، آئی اے اے ایف کے ساتھ معاہدے پر پہنچ گئی ہے کہ اس معاملے کو جلد از جلد حل کیا جائے۔

آئی اے اے ایف نے روسی اتھلیٹکس فیڈریشن کے اولمپکس میں حصہ لینے پر پابندی لگا دی تھی کیونکہ ان پر وسیع پیمانے پر ’ڈوپنگ‘ یا ممنوعہ ادویات کے استعمال کے الزامات عائد کیے گئے تھے۔

لیکن 68 کھلاڑی جن پر یہ الزامات نہیں ہیں ان کا کہنا کہ انھیں اولمپکس میں حصہ لینے کی اجازت ہونی چاہیے۔

روسی اولمپلکس کمیٹی (آر او سی) کا کہنا ہے کہ جن روسی کھلاڑیوں پر ایسا کوئی الزام نہیں ہے اور وہ کھیلوں میں حصہ لینے کی اہلیت رکھتے ہیں یا کوالیفائی کر چکے ہیں انھیں ریو ڈی جنیرو میں ہونے والے اولمپکس میں حصہ لینے کی اجازت ہونی چاہیے۔

ثالثی کی عدالت کا کہنا ہے وہ 21 جولائی تک اس معاملے پر اپنا فیصلہ سنا دے گی۔

اسی بارے میں