پاکستان کی بیٹنگ لڑکھڑا گئی، انگلینڈ کی پوزیشن مضبوط

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جو روٹ 254 رنز سکور کے آؤٹ ہوئے

پاکستان اور انگلینڈ کے مابین اولڈ ٹریفرڈ کےمیدان میں جاری ٹیسٹ میچ میں دوسرے روز کھیل کے اختتام پر پاکستان نےانگلینڈ کے 589 رنز کےجواب میں چار وکٹوں کے نقصان پر 57 رنز بنائے ہیں۔

اوپنر شان مسعود 30 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ ہیں۔ نائٹ واچ مین راحت علی کے آؤٹ ہونے کے بعد کپتان مصباح الحق کو آخری اووروں میں میدان میں اترنا پڑا۔

پاکستان کے محمد حفیظ، اظہر علی، یونس خان اور راحت علی آؤٹ ہو کر پویلین لوٹ چکے ہیں۔

اس سے پہلے انگلینڈ نے اپنی پہلی 589 رنز پر ڈیکلیئر کر دی ہے۔

٭ میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

٭دوسرے روز کھیل کی تصویری جھلکیاں

٭ پاکستان چھ برس بعد انگلینڈ میں: خصوصی ضمیمہ

پاکستان نے اپنی اننگز کا آغاز محتاط انداز میں کیا ہے۔ پاکستان کو پہلا نقصان 13ویں اوور میں ہوا جب محمد حفیظ 18 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ اظہر علی بھی صرف ایک رنز بنا کر کرس ووکس کو اپنی وکٹ تھما گئے۔ بین سٹوکس نے یونس خان کو وکٹ کیپر کے ہاتھوں کیچ کرا کے انگلینڈ کی تیسرے کامیابی دلا دی۔نائٹ واچ راحت علی بھی زیادہ وکٹ پر نہ ٹھہر سکے اور کرس ووکس کے ہاتھوں آؤٹ ہو گئے۔

اس سے پہلے انگلینڈ نے چار وکٹیں گنوا کر اپنے گزشتہ روز کےسکور میں 270 رنز کا اضافہ کیا۔ انگلینڈ کے آؤٹ ہونے والے کھلاڑیوں میں جو روٹ 254، کرس ووکس 58، جونی بیرسٹو 58 اور بین سٹوکس 38 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

پاکستان کی جانب سے وہاب ریاض سب سے کامیاب بولر رہے اور تین وکٹیں حاصل کیں۔

محمد عامر نے پاکستان کی جانب سے سب سے عمدہ بولنگ کی اور 29 اووروں میں 89 رنز دے کر دو وکٹیں حاصل کیں۔ لارڈز کےمیدان میں 10 وکٹیں حاصل کرنے والے یاسر شاہ اس اننگز میں زیادہ وکٹیں حاصل نہیں کر سکے اور54 اووروں میں 214 رنز کے عوض ایک وکٹ حاصل کی۔

پاکستان کو دوسرے روز پہلی کامیابی اس وقت ملی جب نائٹ واچ مین کرس ووکس جو روٹ کے ساتھ سو سے زیادہ رنز کی شراکت بنا کر آؤٹ ہوئے۔ کرس ووکس کا انفرادی سکور 58 رنز تھا۔

پاکستان کو دوسرے روز کی دوسری کامیابی اس وقت ملی جب وہاب ریاض نے بین سٹوکس کو آؤٹ کیا۔

امپائر نے پہلے ان کو ناٹ آؤٹ دیا تھا لیکن پاکستان نے ریفرل لیا جس کے نتیجے میں ان کو کیچ آؤٹ قرار دیا گیا۔

بین سٹوکس نے 34 رنز سکور کیے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کک اور روٹ کے درمیان ایک سو پچاس رنز سے زیادہ کی شراکت داری ہوئی۔

مانچسٹر کے اولڈ ٹریفرڈ کے میدان میں کھیلے جانے والے میچ میں انگلینڈ کے کپتان کک کے بعد روٹ نے بھی اپنی سنچری مکمل کی۔

انگلینڈ کی چوتھی وکٹ بیلنس کی گری جو راحت علی کی گیند پر بولڈ ہو گئے۔ راحت کی میچ میں دوسری وکٹ تھی۔

ونس 18 کےسکور پر راحت کی گیند پر اپنا کیچ وکٹ کیپئر کو دے بیٹھے۔ اس سے پہلے 6 کے سکور پر محمد عامر کی گیند پر ونس کا ایک آسان کیچ سلپ میں یونس خان نے چھوڑ دیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption روٹ نےسنچری سکور کی اور اس وقت کریز پر موجود ہیں

چائے کے وقفے سے پہلے پاکستان کو دوسری کامیابی بھی محمد عامر نے کک کو آؤٹ کر کے دلائی جو 105 رنز بنا کر بولڈ ہو گئے۔

25 کے مجموعی سکور پر ہیلز کے آؤٹ ہونے کے بعد کپتان کک نے روٹ کے ساتھ پاکستانی بولرز کو اعتماد کے ساتھ کھیلتے ہوئے ٹیم کے سکور کو 210 رنز تک پہنچا دیا۔

کک نے 157 گیندوں پر محمد عامر کے اوور میں اپنے ٹیسٹ کریئر کی 29ویں سنچری مکمل کی۔

پاکستان نے 13 اوورز بعد ہی فاسٹ بولنگ کے ساتھ سپن بولر یاسر کو آزمانے کا فیصلہ کیا لیکن وہ 17 اوورز میں وکٹ حاصل نہیں کر سکے۔

انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا اور الیسٹر کک اور ایلکس ہیلز نے اننگز شروع کی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ہیلز کو عامر نے 10 کے سکور پر بولڈ کر دیا

محمد عامر کی گیند پر ایلکس ہیلز کا کیچ اسد شفیق نے چھوڑ دیا اور اس کے فوری بعد عامر کی اندر آتی ایک گیند کو ایلکس ہیلز بالکل سمجھ نہیں سکے اور بولڈ ہو گئے۔

ٹاس جیتنے کے بعد الیسٹر کک کا کہنا تھا کہ ’پچ پر تھوڑی بہت گھاس ہے لیکن زیادہ نہیں۔گراؤنڈز مین نے ایک اچھی پچ تیار ہے۔ ہمارے پاس کچھ غلطیوں کو سدھارنے اور پاکستان کو دباؤ میں لانے کا موقع ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption عامر کی ایک خوبصورت گیند پر ہیلز بولڈ ہو گئے

اس موقع پر مصباح الحق کا کہنا تھا کہ چاہے آپ پہلے بلے باز کریں یا بولنگ۔بات منظم انداز میں کھیلنے کی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستانی بولر پہلے سیشن میں وکٹ سے فائدہ اٹھانے کی کوشش کریں گے۔

اسی بارے میں