فیلپس کا 19واں طلائی تمغہ، ریو میں امریکہ سرِفہرست

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption فیلپس کے لیے ریکارڈ 19واں طلائی تمغہ اور ریو اولمپکس میں پہلا تمغہ

ریو میں جاری اولمپکس مقابلوں کے دوسرے دن کے اختتام پر امریکہ 12 تمغوں کے ساتھ میڈل ٹیبل پر سرفہرست آ گیا ہے۔

ان تمغوں میں تین طلائی تمغے بھی شامل ہیں جن میں سے ایک امریکی تیراکوں نے 4‌x100 میٹر فری سٹائل ریلے میں حاصل کیا۔ اس دوڑ میں فرانس کی ٹیم دوسرے اور آسٹریلیا کی ٹیم تیسرے نمبر پر آئی۔

یہ معروف امریکی تیراک مائیکل فیلپس کا ریو اولمپکس میں پہلا اور مجموعی طور پر 19 واں اولمپک گولڈ میڈل تھا۔

ریلے ریس میں فیلپس امریکہ کی جانب سے دوسرے نمبر پر تیرنے کے لیے کودے تھے اور انھوں نے تین منٹ 9.92 سیکنڈ میں 100 میٹر کا فاصلہ طے کیا۔

31 سالہ فیلپس دنیا میں سب سے زیادہ اولمپک طلائی تمغے حاصل کرنے والے کھلاڑی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption میجلنڈا کیلمنڈی نے کوسوو کے لیے پہلا طلا‏ئی تمغہ حاصل کیا ہے

وہ پانچویں بار اولمپکس مقابلوں میں شرکت کر رہے ہیں اور وہ مجموعی طور پر 23 میڈل اپنے نام کر چکے ہیں جن میں چاندی اور کانسی کے بھی دو، دو تمغے شامل ہیں۔

ان کے تمغوں کی تعداد اس فہرست میں دوسرے نمبر پر موجود سابق روسی جمناسٹ لارسیا لتینینا سے دگنے سے بھی زیادہ ہے۔

فیلپس نے سنہ 2012 کے لندن اولمپکس کے بعد ریٹائرمنٹ لے لی تھی لیکن پھر سنہ 2014 میں انھوں نے اپنا فیصلہ واپس لے لیا۔

دوسرے دن کے مقابلوں میں ایک اہم بات کوسوو کا اولمپکس میں پہلا طلائی تمغہ تھا۔ یہ اعزاز میجلنڈا کیلمنڈی نے حاصل کیا جو جوڈو کے 52 کلوگرام مقابلوں میں کامیاب رہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption قنگکوان نے چین کے لیے ویٹ لفٹنگ میں طلائی تمغہ حاصل کیا

25 سالہ کیلمنڈی نے اٹلی کی کھلاڑی کو ہرا کر یہ تمغہ حاصل کیا۔ اس سے قبل وہ البانیا کی جانب سے لندن اولمپکس میں شریک ہوئی تھیں۔

برطانیہ نے بھی اولمپکس میں اپنے طلائی تمغوں کا کھاتہ دوسرے دن کھولا جب 21 سالہ تیراک ایڈم پیٹی نے 100 میٹر بریسٹ سٹروک مقابلے میں نیا عالمی ریکارڈ قائم کرتے ہوئے کامیابی حاصل کی۔

ریو اولمپکس میں دوسرے دن کے اختتام پر چین امریکہ کے بعد دوسرے نمبر پر ہے۔ چین کے لیے ان مقابلوں میں تیسرا طلائي تمغہ لونگ کنگ کوان نے ویٹ لفٹنگ میں حاصل کیا۔ انھوں نے 56 کلو گرام مقابلے میں مجموعی طور پر 307 کلوگرام وزن اٹھایا جو کہ نیا ورلڈ ریکارڈ بھی ہے۔

انڈیا کی جمناسٹ دیپا کرماکر نے ریو اولمپکس میں جمناسٹکس کے فائنل مقابلے میں جگہ بنائی ہے۔ وہ سنہ 1964 کے بعد اس مرحلے تک پہنچنے والی پہلی انڈین خاتون ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سرینا اور وینس ولیمز خوہران کی جوڑی ریو میں ناکام ہو گئی

دیپا آرٹسٹك جمناسٹک مقابلے میں چھٹے نمبر پر رہیں۔

دیپا کے برعکس انڈیا کی نشانہ باز حنا سنگھ اور انڈین خاتون تیر اندازوں کی ٹیم اپنے اپنے مقابلے ہار گئیں۔

تیراندازوں کو ٹیم مقابلوں کے کوارٹر فائنل میں روسی ٹیم نے چار کے مقابلے میں پانچ گیمز سے شکست دی۔

ٹینس مقابلوں میں پہلے دن شروع ہونے والا اپ سیٹس کا سلسلہ دوسرے دن بھی جاری رہا جب دنیا کے نمبر ایک کھلاڑی نوواک جوکووچ مردوں کے سنگلز مقابلوں کے پہلے ہی دور میں ہار کر باہر ہو گئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption انڈیا کی جمناسٹ دیپا کرماکر فائنل میں پہنچي ہیں

انھیں ارجنٹینا کے کھلاڑی ژاں مارٹن ڈیل پورٹو سے سخت مقابلے کے بعد 7-6, 7-6 سے شکست دی۔

ان کے علاوہ برطانیہ کے اینڈی اور جیمی مرے کی جوڑی مردوں کے ڈبلز مقابلے سے باہر ہو گئی تاہم سنگلز مقابلوں کے دفا‏عی چیمپیئن اینڈی مرے نے سربیا کے کھلاڑی وکٹر ٹروئکی کو ہرا کر پہلا راؤنڈ جیت لیا۔

امریکہ کی سرینا اور وینس ولیمز کی جوڑی بھی اپنا پہلا میچ ہار کر خواتین کے ڈبلز مقابلوں سے باہر ہو گئی۔ یہ جوڑی چوتھی بار اولمپک میڈل حاصل کرنے کی امید رکھتی تھی۔

وینس ولیمز مقابلوں کے پہلے دن سنگلز میچ میں بھی شکست کھا چکی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption عراق کی ٹیم نے حیرت انگیز طور پر میزبان برازیل کے خلاف میچ برابری پر ختم کیا

اسی بارے میں