ریو 2016: امریکہ اور چین کے بعد برطانیہ تیسرے نمبر پر

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption محمد فرح نے گرنے کے باوجود دس ہزار میٹر دوڑ میں طلائی تمغہ حاصل کیا

برازیل کے شہر میں جاری ریو اولمپکس میں آٹھویں دن امریکہ، جمائیکا اور برطانیہ کے ایتھلیٹس کا دبدبہ رہا جبکہ پورٹوریکو نے پہلی بار طلائی تمغہ حاصل کیا ہے۔

امریکہ نے24 طلائی تمغوں کے ساتھ مجموعی طور60 تمغے حاصل کیے اور وہ سرفہرست ہے جبکہ چین 13 طلائی تمغوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہے۔

سنیچر کا دن برطانیہ کے لیے بہت بہتر رہا۔ اس نے آٹھویں دن آٹھ تمغے حاصل کیے اور اب وہ دس طلائی تمغوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے جبکہ جرمنی چوتھے اور جاپان پانچویں نمبر پر ہے۔

برطانیہ کے لیے محمد فرح نے گرنے کے باوجود 10 ہزار میٹر کی دوڑ میں طلائی تمغہ حاصل کیا۔ یہ ان کا اولمپکس کھیلوں میں تیسرا طلائی تمغہ ہے۔

خواتین کی 100 میٹر دوڑ میں جمائیکا کی ایلین تھامپسن نے شیلی این فریزر کی حکمرانی کو ختم کردیا اور طلائی تمغہ حاصل کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption برطانیہ نے سنہ 2012 لندن اولمپکس میں بھی طلائی تمغہ حاصل کیا تھا

سوئمنگ میں امریکی لیجنڈ تیراک مائیکل فیلپس نے ریو کا پانچواں اور مجموعی طور پر اپنے کریئر کا 23واں طلائی تمغہ حاصل کیا۔

فیلپس نے اپنا آخری طلائی تمغہ 4x100 میٹر میڈلے ریلے میں حاصل کیا۔ برطانیہ دوسرے نمبر پر رہا جبکہ کانسی کا تمغہ آسٹریلیا کے حصے میں آیا۔

ٹینس میں مردوں کے سنگلز مقابلے میں ارجنٹینا کے جوان مارٹن ڈل پوٹرو فائنل میں پہنچ گئے ہیں جہاں طلائی تمغے کے لیے ان کا مقابلہ برطانیہ کے ومبلڈن چیمپیئن اینڈی مرے سے ہوگا۔

خواتین کے سنگلز مقابلے میں پورٹوریکو کی مونیکا پوئگ فاتح رہیں اور اس طرح انھوں نے اپنے ملک کو پہلا طلائی تمغہ دلایا۔ چاندی کا تمغہ جرمنی کی اینگلیکے کیربر نے حاصل کیا۔

شمشیر زنی کے خواتین مقابلے میں روس کا دبدبہ قائم ہے اور اس نے سیبرے فینسنگ میں بھی طلائی تمغہ حاصل کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فیلپس نے اپنے کریئر میں مجموعی طور پر 28 تمغے حاصل کیے

ویٹ لفٹنگ میں سنیچر کو ایران نے دوسرا طلائی تمغہ حاصل کیا۔ 94 کلو گرام وزن کے مقابلے میں سہراب مرادی نے طلائی تمغہ حاصل کیا۔

سائیکلنگ میں برطانیہ کی خواتین ٹیم نے طلائی تمغہ حاصل کیا۔ امریکہ کو نقرئی تمغے پر ہی اکتفا کرنا پڑا۔

روس میں ممنوعہ ادویات کے معاملے کو اجاگر کرنے والی ایتھلیٹ یولیا سٹیپینووا حفاظتی اقدام کے تحت نامعلوم مقام پر چلی گئی ہیں۔

عالمی اینٹی ڈوپنگ ایجنسی نے کہا کہ ان کا اکاؤنٹ ہیک کر لیا گیا تھا جس سے ان کے لوکیشن کا علم ہو سکتا تھا۔

اسی بارے میں