انڈین بیڈمنٹن کھلاڑی اولمپکس کے سیمی فائنل میں

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption انڈیا کی ایتھلیٹ سابق بین الاقوامی کھلاڑی گوپی چند سے تربیت حاصل کرتی رہی ہیں

ریو میں جاری اولمپکس میں بیڈمنٹن کے مقابلوں میں انڈیا کی 21 سالہ پی وی سندھو نے چین کی عالمی نمبر دو کھلاڑی کو شکست دے کر اپ سیٹ کر دیا۔

پی وی سندھو نے وانگ یہان کو منگل کو ہونے والے خواتین کے سنگلز مقابلوں کے کوارٹر فائنل میں شکست دی۔

٭ ریو میں برطانیہ کی دوسری پوزیشن مزید مستحکم

٭ ٹراٹ برطانیہ کی کامیاب ترین خاتون اولمپیئین بن گئیں

٭ ریو 2016: کھیل کےحقیقی جذبے کی پذیرائي

چین سے تعلق رکھنے والی 28 سالہ وانگ یہان ریو اولمپکس میں خواتین کا سنگلز ٹائٹل جیتنے کے لیے فیورٹ تھیں۔

وہ اس سے پہلے سنہ 2012 میں لندن اولمپکس میں کانسی کا تمغہ جیت چکی ہیں۔

سندھو نے وانگ کو 54 منٹ تک جاری رہنے والے مقابلے میں 10- 22 اور 19-21 کے سکور سے شکست دی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سندھو نے وانگ کو 54 منٹ تک جاری رہنے والے مقابلے میں 10- 22 اور 19-21 کے فرق سے شکست دی

انڈیا کی کھلاڑی جمعرات کو کھیلے جانے والے سیمی فائنلز میں جاپان کی نوزومی اوکوہارا سے مقابلہ کریں گی۔

پانچ جولائی سنہ 1995 کو انڈیا میں پیدا ہونے والی سندھو نے آٹھ سال کی عمر سے بیڈمنٹن کھیلنا شروع کر دیا تھا۔

سندھو کا کہنا ہے کہ ان کے والدین والی بال کے سابق کھلاڑی رہ چکے ہیں تاہم انھوں نے ان کی خواب کی تعبیر حاصل کرنے کے لیے انھیں متحرک کیا۔

سندھو انڈیا کی ایتھلیٹ سابق بین الاقوامی کھلاڑی گوپی چند سے تربیت حاصل کرتی رہی ہیں۔

گوپی چند کا سندھو کے حوالے سے کہنا ہے ’وہ کبھی ہمت نہیں ہارتی ہیں اور یہ ان کی بہترین صلاحیت ہے۔‘

سندھو سنہ 2014 میں گلاسگو میں منعقد ہونے والے کامن ویلتھ گیمز میں سیمی فائنل تک پہنچی تھیں اور سنہ 2015 میں ڈنمارک اوپن کے فائنل میں چین کی لی سے ہار گئی تھیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پانچ جولائی سنہ 1995 کو انڈیا میں پیدا ہونے والی سندھو نے آٹھ سال کی عمر سے بیڈ منٹن کھیلنا شروع کر دیا تھا

سندھو کی فتح کے بعد انڈیا کے سوشل میڈیا پر متعدد افراد نے ان کے کارنامے کی تعریف کرتے ہوئے ملک کے لیے ایک تمغہ جیتنے کی امید کا اظہار کیا ہے۔

ٹوئٹر پر سندھو کے کھیل کی تعریف کرتے ہوئے ایک صارف نے لکھا کہ انھوں نے ملک کے لیے قابلِ فخر کارنامہ سر انجام دیا ہے۔

سوشل میڈیا پر تاپسی پنوں نے لکھا ’سندھو نے دو سٹریٹ سیٹس میں کامیابی حاصل کی۔‘

ایک دوسرے صارف نے لکھا ’ سندھو کی جیت سے انڈیا کے لیے تمغہ حاصل کرنے کی امیدیں ایک بار پھر سے زندہ ہو گئی ہیں۔‘ جب کہ ایک اور نے لکھا ’پورا انڈیا سندھو کے ساتھ ہے۔‘

اسی بارے میں