’موقع ملا تو دورۂ بنگلہ دیش کے لیے ضرور جاؤں گا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption معین علی کا کہنا تھا کہ ’یہ ایک آسان فیصلہ نہیں ہے‘

انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے آل راؤنڈر معین علی نے تصدیق کی ہے کہ اگر وہ ٹیم میں منتخب کیے گئے تو وہ سکیورٹی خدشات کے باوجود بنگلہ دیش جائیں گے۔

انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کو سکیورٹی جائزے کے بعد بنگلہ دیش کے دورے کی اجازت دی گئی ہے۔

٭ انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم بنگلہ دیش جائے گی

خیال رہے کہ جولائی میں ڈھاکہ کے ایک کیفے میں ہونے والے حملے میں 20 یرغمالیوں کو ہلاک کردیا گیا تھا۔

معین علی کا کہنا ہے کہ ’میں منتخب کیا گیا تو ضرور جاؤں گا۔‘

وہ بنگلہ دیش کے اس دورے پر جانے کی تصدیق کرنے والے پہلے انگلش کرکٹر ہیں۔

اس سے قبل انگلش ایک روزہ ٹیم کے کپتان ایئن مورگن کا کہنا تھا کہ کسی بھی کھلاڑی کو بنگلہ دیش کے دورے کے لیے مجبور نہیں کیا جائے گا۔

انگلینڈ کی ٹیم سات اکتوبر سے یکم نومبر تک بنگلہ دیش میں تین ایک روزہ اور دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز کھیلے گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ BCB
Image caption انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کو سکیورٹی جائزے کے بعد بنگلہ دیش کے دورے کی اجازت دی گئی ہے

بنگلہ دیش میں ہی آئی سی سی ورلڈ ٹی 20 کھیلنے والے معین علی کا کہنا تھا کہ ’ہر کسی کے اپنے خیالات ہیں لیکن میں خاصا پراعتماد ہوں، میں بہت کچھ کھونا پسند نہیں کرتا۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’میں جانتا ہوں کہ لوگوں کے لیے یہ ایک مشکل فیصلہ ہے، اور میرے لیے بھی یہ کٹھن تھا، لیکن میں خوش ہوں کہ میں جارہا ہوں۔‘

سابق انگلش کپتان کیون پیٹرسن کین قیادت میں انگلینڈ کی ٹیم انڈیا کا دورہ کر رہی تھی جب سنہ 2008 میں ممبئی حملے ہوئے، جس کے بعد انھیں یہ دورہ ادھورا چھوڑنا پڑا تھا۔

حال ہی میں کیون پیٹرسن کا کہنا تھا کہ کچھ سینیئر کھلاڑی بنگلہ دیش کے دورے کے خلاف ہوسکتے ہیں۔

تاہم معین علی کا کہنا ہے کہ ’یہ ایک آسان فیصلہ نہیں ہے اور جو کچھ بھی ہوتا ہے کہ اگر وہ حمایت نہیں کرتے تو ان کی حمایت کی جائے گی۔‘

خیال رہے کہ انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ سکیورٹی خدشات کے باوجود انگلش کرکٹ ٹیم کے اکتوبر میں بنگلہ دیش کے دورے پر جانے کی تصدیق کر چکی ہے۔

اسی بارے میں