’فضائی کمپنی کی اہلکار نے اولمپیئن مو فراح کی تذلیل کی‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption محمد فرح نے ریو اولمپکس میں 5000 میٹر اور 10 ہزار میٹر کی دوڑ میں طلائی تمغے حاصل کیے تھے

برطانوی اولمپیئن مو فراح کی اہلیہ کا کہنا ہے کہ امریکہ میں پرواز سے پہلے ایک فضائی کمپنی کے عملے کی ایک اہلکار نے مو فراح کی تذلیل کی اور انھیں قطار میں سب سے پیچھے بھیج دیا۔

تانیہ فراح کا کہنا تھا کہ ڈیلٹا ایئرلائنز کی اہلکار نے اولمپکس مقابلوں میں چار بار طلائی کا تمغہ جیتنے والے ایتھلیٹ سے زور دار آواز میں بات کی اور اس امر پر یقین کرنے سے انکار دیا کہ ان کے پاس بزنس کلاس کا ٹکٹ ہے۔

انھوں نے سنڈے ٹائمز کو بتایا: ’میں صرف اتنا جانتی ہوں کہ انھیں ان (مو فراح) سے کوئی مسئلہ تھا۔‘

* ایتھلیٹکس کے عالمی مقابلوں میں فراح کا ایک اور کارنامہ

ڈیلٹا ایئرلائن کے ترجمان کا کہنا ہے وہ اس معاملے کی تفتیش کر رہے ہیں اور ’فراح کے خاندان کے ساتھ براہ راست رابطے میں ہیں۔‘

محمد فراح نے ریو اولمپکس میں 5000 میٹر اور 10 ہزار میٹر کی دوڑ میں اپنے اعزاز کا دفاع کرتے ہوئے طلائی تمغے حاصل کیے تھے اور وہ اٹلانٹا سے اوریگون کے شہر پورٹ لینڈ جارہے تھے۔

ان کی اہلیہ کا کہنا تھا کہ ’اس خاتون نے بنیادی طور پر ان کی بے عزتی کی جب تک کچھ لوگ آگے آئے اور انھوں نے کہ ’یہ مو فراح، اولمپک چیمیپئن ہیں، جس کے بعد وہ شرمندہ ہوئیں، لیکن وہ ان پر چلّا چکی تھیں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ وہاں وہ اکیلے سیاہ فام شخص تھے۔

مبینہ طور پر یہ واقعہ 22 اگست کو پیش آیا جب مو فراح اپنے چار بچوں کے ہمراہ ریو سے واپس آرہے تھے۔

33 سالہ محمد فراح مسلسل تیسری بار گریٹ نارتھ رن کا اعزاز جیتنے کے لیے پرعزم ہیں۔ اتوار کو نیو کاسل میں ہونے والی اس دوڑ میں اگر وہ کامیاب ہوگئے تو وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والے پہلے شخص ہوں گے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں