’روس یوکرین کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش نہ کرے‘

  • 8 اپريل 2014
باغیوں نے یوکرین سے الگ ہونے کے لئے 11 مئی تک ریفرینڈم کرانے کو کہا ہے

یوکرین میں روس کے حامیوں کی جانب سے سرکاری عمارات پر قبضے کے بعد امریکہ نے یوکرین میں بڑھتی ہوئی کشیدگی پر شدید خدشات کا اظہار کیا ہے۔

امریکہ کے وزیرِ خارجہ جان کیری کے فون پر روسی ہم منصب سرگے لاوروف سے کہا کہ روس کو یوکرین کو غیر مستحکم کرنے کی کوششوں کی قیمت ادا کرنے پڑے گی۔

دونوں رہنماؤں نے آئندہ ہفتے براہِ راست مذاکرات کے انعقاد امکانات پر بات کی۔

اس سے قبل یوکرین کے مشرقی شہر دونیتسك میں روس نواز مظاہرین نے سرکاری عمارت پر قبضہ کر کے ’خود مختار عوامی جمہوریہ‘ کا اعلان کر دیا تھا۔

باغیوں نے یوکرین سے الگ ہونے کے لئے 11 مئی تک ریفرینڈم کرانے کو کہا ہے۔

وہیں یوکرین کی حکومت تین مشرقی شہروں دونیتسك، لہاسك اور خاركیئف میں سیکورٹی فورسز کو بھیجا ہے۔ ان شہروں میں روس نواز گروپوں نے سرکاری عمارتوں پر کنٹرول کر لیا ہے۔

یوکرین کے عبوری صدر نے تازہ واقعات کو ’یوکرین کو منقسم کرنے کی روسی کوشش‘ قرار دیا ہے۔

کچھ دنوں پہلے ہی یوکرین کا خود مختار علاقہ كرائميا ایک ریفرینڈم کے بعد روس میں شامل ہو گیا تھا۔ یوکرین اور مغربی ممالک نے اس اقدام کی مخالفت کی تھی۔

یوکرین کے عبوری صدر نے قومی ٹی وی پر اپنے خطاب میں کہا کہ یوکرین کو غیر مستحکم کرنے، حکومت کو ہٹانے اور انتخابات میں خلل ڈالنے کے لیے یہ ’روسی مہم کی دوسری لہر‘ ہے۔

وہیں روس نے کہا ہے کہ یوکرین اپنی تمام پریشانیوں کے لیے اسے ہی ذمہ دار ٹھہرا رہا ہے۔

امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے کہا کہ یہ واقعات ناقابلِ قبول ہیں۔

یوکرین کے وزیر خارجہ نے روس کی ایک خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ روس نے اگر مشرقی یوکرین میں فوجی بھیجے تو اس کے ساتھ جنگ کی صورت حال پیدا ہو جائے گی۔

روس نے یوکرین سے ملحق اپنی سرحد پر ہزاروں فوجیوں کو تعینات کر رکھا ہے۔ روس کا کہنا ہے کہ اس کا حملہ کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے، لیکن وہ روسی نژاد لوگوں کے حقوق کے تحفظ کا حق محفوظ رکھتا ہے۔

دونیتسك صنعتی شہر ہے جس کی آبادی دس لاکھ کے قریب ہے۔ ماسکو میں بی بی سی کے نامہ نگار ڈینیئل سینفرڈ کا کہنا ہے کہ دونیتسك کی حالت كرائميا سے اس لیے مختلف ہے کیونکہ وہاں روسی زبان بولنے والوں کے ساتھ ساتھ یوکرینیئن بولنے والوں کی بھی بڑی تعداد موجود ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ وہاں ہونے والے کئی سروے بتاتے ہیں کہ بہت سے لوگ متحد یوکرین کے حامی ہیں۔

لیکن انٹرنیٹ پر موجود ایک ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ ایک روسی بولنے والے شخص نے دونیتسك اسمبلی میں کہا ہے: ’میں ایک خود مختار قوم پیپلز جمہوریہ آف دونیتسك کے آغاز کا اعلان کرتا ہوں۔‘

اس سے پہلے پیر کو مظاہرین نے دونیتسک اور لہاسك میں سرکاری فوجی عمارتوں پر قبضہ کر لیا تھا۔

اسی بارے میں