پرتگال کے سابق وزیراعظم اینتونیو گتریز اقوام متحدہ کے اگلے سربراہ بننے کے لیے تیار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption خیال رہے کہ اینتونیو گتریز گذشتہ دس سالوں سے اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزین کی سبراہی کر رہے ہیں

اقوام متحدہ کے سفارت کاروں کا کہنا ہے کہ پرتگال کے سابق وزیر اعظم اینتونیو گتریز اقوام متحدہ کے اگلے سیکریٹری جنرل بننے جا رہے ہیں۔

بدھ کو اقوام متحدہ میں روس کے سفیر ویتالے چوركن نے اعلان کیا کہ 66 سالہ اینتونیو گتریز اس عہدے کے لیے ’واضح طور پر پسندید‘ شخصیت ہیں۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں جمعرات کو امیداوار کی تصدیق کرنے کے لیے باقاعدہ ووٹنگ ہوگی۔

خیال رہے کہ اینتونیو گتریز گذشتہ دس سالوں سے اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزین کی سبراہی کر رہے ہیں۔

وہ آئندہ سال بان کی مون کی جگہ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کا عہدہ سنبھالیں گے۔

اقوامِ متحدہ میں امریکہ کی مندوب سمانتھا پاور نے اس حوالے سے کہا کہ ’انتخاب کا یہ عمل غیر معمولی طور پر غیر متنازع تھا۔‘

سمانتھا پاور کا کہنا تھا کہ ’سب نے اس پر اتفاق کیا جس نے اس سارے عمل کے دوران سب کو متاثر کیا۔‘

سلامتی کونسل کے 15 ارکان نے بدھ کو دس امیدواروں کے لیے خفیہ ووٹ دیا اور کسی نے بھی اینتونیو گتریز کی مخالفت نہیں کی۔

ان ارکان سے کہا گیا تھا کہ وہ امیدواروں میں سے کسی بھی امیدوار کا انتخاب کرنے کے لیے ’حمایت کرنا‘، ’حمایت نہ کرنا‘ یا ’کوئی رائے نہیں‘ لکھیں۔ ان 15 ووٹوں میں سے اینتونیو گتریز کی حمایت میں 13 پڑیں جبکہ دو ارکان نے کسی بھی امیدوار کے حق میں ووٹ نہیں دیا۔

اینتونیو گتریز نے جن نو امیدواروں کو شکست دی ان میں بلغاریہ سے تعلق رکھنے والی یورپی یونین کی بجٹ کمشنر کرسٹالینا جارجیوا بھی شام ہیں۔

امید ظاہر کی جا رہی تھی کہ اس مرتبہ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کے عہدے کے لیے کسی خاتون کا انتخاب کیا جائے گا۔

آئندہ سال جنوری میں بان کی مون دس سال بعد سیکریٹری جنرل کا عہدہ چھوڑ دیں گے۔