ٹرمپ کا صدارتی مباحثے سے پہلے ہلیری کے ڈرگ ٹیسٹ کا مطالبہ

ٹرمپ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ٹرمپ کا کہنا ہے کہ میڈیا ان کی حریف ہلیری کلنٹن کی ملی بھگت سے یہ الزامات عائد کر رہا ہے

امریکہ میں صدر کے عہدے کے لیے رپبلکن امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ ان کا اور ان کی حریف ڈیموکریٹک امیدوار ہلیری کلنٹن کا منشیات ٹیسٹ ہونا چاہیے۔

انھوں نے کہا ہے کہ دونوں کے درمیان اگلے صدارتی مباحثے سے قبل دونوں کا منشیات ٹیسٹ ہونا چاہیے۔

نیو ہیمپشائر میں ریلی سے خطاب میں انھوں نے انتخاب میں ممکنہ دھاندلی کا الزام بھی عائد کیا۔

انھوں نے الزام عائد کیا کہ گذشتہ مباحثے میں ہلیری پر انتہائی پرجوش تھیں لیکن آخر میں وہ کار تک بھی مشکل سے پہنچیں۔ تاہم انھوں نے اس کے لیے کوئی ثبوت پیش نہیں کیا۔

ٹرمپ کا یہ بیان ایسے وقت میں آیا ہے جب ان پر کئی خواتین نے جنسی حملوں کے الزام لگائے ہیں۔

اس کا آعآز اس ریکارڈنگ کے منظرِ عام پر آنے کے بعد ہوا جس مں انھوں نے خواتین کے بارے میں نازیبا کلمات کہے۔

اس ویڈیو پر شدید تنقید کے بعد انھوں نے معافی مانگی تھی اور اسے بند کمرے میں ہونے والی گفتگو قرار دیا تھا۔ تاہم خواتین کے جنسی حملے کے الزامات کو انھوں مسترد کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption انھوں نے کہا ہے کہ دونوں کے درمیان اگلے مباحثے سے قبل دونوں کا منشیات ٹیسٹ ہونا چاہیے

انتخابی سروے کے مطابق یہ الزام لگنے کے بعد ٹرمپ کئی اہم انتخابی ریاستوں میں اپنی مقبولیت کھو رہے ہیں۔

بعدازاں فلوریڈا میں اپنے حامیوں سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ خواتین کی جانب سے ان پر لگائے جانے والے الزامات 'خوفناک حد تک جھوٹے ہیں۔'

انھوں نے کہا کہ میڈیا ان کی حریف ہلیری کلنٹن کی ملی بھگت سے یہ الزامات عائد کر رہا ہے۔

اس سے قبل امریکی صدر باراک اوباما کی اہلیہ مشیل اوباما نے ہیمپشائر میں اپنے خطاب میں عورتوں سے متعلق ٹرمپ کے عمل کے بارے میں کہا کہ یہ تذلیل پر مبنی اور قابلِ نفرت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ رہنماؤں کو بنیادی انسانی شائستگی پر پورا اترنا چاہیے۔

امریکہ میں نئے صدر کے انتخاب کے لیے ووٹنگ نومبر میں ہونی ہے۔

اسی بارے میں