شمالی کیرولائینا میں ریپبلکن پارٹی کے دفتر پر آتش گیر مادے سے حملہ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ریپبلکن جماعت کے امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے بظاہر اس حملے کا ذمہ دار ڈیموکریٹک جماعت کے حمایتیوں کا قرار دیا ہے

امریکی ریاست شمالی کیرولائینا میں حکام کا کہنا ہے کہ ریپبلکن جماعت کے دفتر کو آگ لگنے سے نقصان پہنچا ہے جبکہ قریبی عمارات پر سپرے کے ذریعے پارٹی کی مخالفت میں نعرے بھی لکھے گئے ہیں۔

ریپبلکن جماعت کا کہنا ہے کہ رات گئے ریپبلکن جماعت کے اورنج کاؤنٹی ہیڈکوارٹر کی کھڑکی سے آتش گیر مادے سے بھری ایک بوتل اندر پھینکی گئی۔

گرینڈ اولڈ پارٹی یعنی (جی او پی) کے ریاستی ڈائریکٹر ڈیلس ووڈ ہاؤس نے بتایا ہے کہ اس واقعے کے نتیجے میں کوئی شخص زخمی نہیں ہوا تاہم دیگر تمام دفاتر کو سکیورٹی الرٹ جاری کر دیے گئے ہیں۔

ریپبلکن جماعت کے قریب عمارت پر سپرے کے ذریعے لکھا گیا تھا: ’نازی ریپبلکن اس علاقے یا کہیں اور سے بھی باہر نکل جائیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ہلزبرو کے ڈیموکریٹک میئر ٹام سٹیونز نے بھی اپنے ایک بیان میں اس حملے کی مذمت کی ہے

دوسری جانب امریکی صدارتی انتخاب کی دوڑ میں شامل ڈیموکریٹک پارٹی کی امیدوار ہیلری کلنٹن نے ایک ٹوئٹ میں کہا ہے کہ ’یہ حملہ خوفناک اور ناقابل قبول ہے۔‘

لیکن ریپبلکن جماعت کے امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے بظاہر اس حملے کا ذمہ دار ڈیموکریٹک جماعت کے حمایتیوں کو قرار دیا ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹوئٹر پر کہا کہ ’ہیلری کلنٹن اور ڈیموکریٹس کی نمائندگی کرنے والے جانوروں نے شمالی کیرولائینا میں ہمارے دفتر پر آتش گیر مادے سے حملے کیا۔‘

مقامی پولیس نے بتایا ہے کہ وہ اس واقعے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

ہلزبرو کے ڈیموکریٹک میئر ٹام سٹیونز نے بھی اپنے ایک بیان میں اس حملے کی مذمت کی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں