امریکی صدارتی انتخاب 2016: ’ٹرمپ بہانے بازی بند کریں‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption 'اگر آپ ہارنے لگیں اور آپ کسی اور پر ذمہ داری ڈالنا شروع کر دیں، تو اس کا مطلب ہے کہ آپ میں وہ خصوصیات نہیں جو کہ اس کام میں درکار ہیں۔'

امریکی صدر براک اوباما نے رپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے صدارتی انتخاب میں دھاندلی کی منصوبہ بندی کے بارے میں الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ بہانے بنانا بند کریں۔

صدر اوباما نے کہا کہ کسی صدارتی امیدوار کا انتخابات سے پہلے ہی امریکی الیکشن کو متنازع بنانے کی کوشش بہت انوکھی ہے۔

انھوں نے کہا کہ کسی صدارتی امیدوار کی جانب سے روسی صدر کی تعریفیں بھی غیر معمولی ہیں۔

یاد رہے کہ رپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف متعدد خواتین کی جانب سے جنسی ہراسانی کے الزامات اور اس سے متعلق ایک ویڈیو جس میں وہ اپنے ایسے اقدامات کو فخر سے بیان کر رہے ہیں کے سامنے آنے کے بعد سے انھیں مشکلات کا سامنا ہے۔

الیکشن سے پہلے ہی رائے عامہ کے زیادہ تر پولز میں ان کی مقبولیت میں کمی نظر آ رہی ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے دعویٰ کیا ہے کہ آئندہ ماہ ہونے والے امریکی صدارتی انتخابات میں ہلیری کلنٹن کے حق میں دھاندلی کی منصوبہ بندی کر لی گئی ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کے بارے میں صدر اوباما کا کہنا ہے کہ یہ صدر کے عہدے کے لیے درکار قیادت اور ہمت کی عکاسی نہیں کرتا کہ آپ مقابلے سے پہلے ہی بہانے بنانا شروع کر دیں۔

’اگر آپ ہارنے لگیں اور آپ کسی اور پر ذمہ داری ڈالنا شروع کر دیں، تو اس کا مطلب ہے کہ آپ میں وہ خصوصیات نہیں جو کہ اس کام کے لیے درکار ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption ڈونلڈ ٹرمپ نے دعویٰ کیا ہے کہ آئندہ ماہ ہونے والے امریکی صدارتی انتخابات میں ہلیری کلنٹن کے حق میں دھاندلی کی منصوبہ بندی کر لی گئی ہے

اس سے قبل صدر براک اوباما نے رپبلکن پارٹی کی اعلیٰ قیادت سے کہا تھا کہ وہ باضابطہ طور پر ڈونلڈ ٹرمپ کی صدارتی انتخابی مہم کی حمایت سے پیچھے ہٹ جائے۔

ہلیری کلنٹن کی حمایت کے لیے ایک جلسے میں شرکت کرتے ہوئے صدر اوباما کا کہنا تھا کہ اس بات کی کوئی تُک نہیں کہ آپ ڈونلڈ ٹرمپ کے (خواتین کے معاملہ میں) نازیبا بیانات کی مخالفت کریں لیکن پھر بھی ان کی صدارت کی حمایت کریں۔

یاد رہے کہ حال ہی میں ڈونلڈ ٹرمپ کی خواتین کے بارے میں نازیبا گفتگو کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد سے رپبلکن پارٹی کے 30 کے قریب سینیئر رہنماؤں نے کہا تھا کہ وہ ٹرمپ کو ووٹ نہیں دیں گے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے ان لوگوں کو غدار قرار دیا ہے۔ ٹرمپ نے خصوصی طور پر اپنی ہی جماعت کے سینیئر ترین رہنما پال رائن کو کمزور اور غیر موثر رہنما قرار دے دیا ہے۔

امریکہ ایوانِ نمائندگان کے سپیکر اور رپبلکن جماعت کے ملک میں سب سے اعلیٰ عہدے پر فائز رہنما پال رائن نے کہا تھا کہ خواتین سے دست درازی سے متعلق بیان سامنے آنے کے بعد وہ اپنی جماعت کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کا دفاع نہیں کریں گے۔

اسی بارے میں