ٹرمپ کا انتخابی نتائج کے بارے میں بیان ’خطرناک‘ ہے: براک اوباما

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption براک اوباما نے کہا کہ اس طرح عوام کے ذہنوں میں امریکی انتخاب کے حوالے سے شک کے بیج بونا ملک دشمنوں کو بڑھاوا دینے کے برابر ہے

امریکی صدر براک اوباما کا کہنا ہے کہ رپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کا یہ اصرار کے شاید وہ انتخاب کے نتائج کو تسلیم نہ کریں ’خطرناک‘ ہے۔

میامی میں ڈیموکریٹک امیدوار ہلیری کلنٹن کی ریلی میں خطاب کرتے ہوئے صدر براک اوباما نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے تبصرے امریکی جمہوریت کو کمزور کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی حریف ہلیری کلنٹن کے ساتھ ٹی وی پر ہونے والے آخری مباحثے میں آٹھ نومبر کو ہونے والے صدارتی انتخاب کے نتائج کو تسلیم کرنے سے انکار کیا تھا۔

٭ ڈونلڈ ٹرمپ اور ہلیری کلنٹن تیسرے مباحثے میں آمنے سامنے

٭ ریپبلکن قیادت ڈونلڈ ٹرمپ کی حمایت کرنا بند کرے: اوباما

بعد میں ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ وہ صرف ’شفاف‘ نتائج کو تسلیم کریں گے۔

جمعرات کو اوہائیو میں خطاب کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے اسی بات کو کچھ اس انداز میں کہا: ’میں وعدہ کرتا ہوں اور اپنے تمام ووٹروں اور حمایت کرنے والوں اور تمام امریکی عوام کو یقین دلاتا ہوں کہ میں اس عظیم اور تاریخی انتخاب کے نتائج کو مکمل طور پر تسلیم کروں گا، لیکن اگر میں کامیاب ہوا تو۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ڈونلڈ ٹرمپ نے ہلیری کلنٹن کے ساتھ ہونے والے آخری مباحثے میں صدارتی انتخاب کے نتائج کو تسلیم کرنے سے انکار کیا تھا

اسی خطاب میں انھوں نے مزید کہا کہ وہ انتخاب کے واضح نتائج کو تسلیم کریں گے لیکن دوسری صورت میں وہ قانونی کارروائی کا حق بھی رکھتے ہیں۔

اس کے چند گھنٹوں بعد امریکی صدر براک اوباما نے کہا کہ اس طرح سے عوام کے ذہنوں میں امریکی انتخاب کے حوالے سے شک کے بیج بونا ملک کے دشمنوں کو بڑھاوا دینے کے برابر ہے۔

صدر اوباما نے کہا کہ ’آپ ہمارے مخالف کام کر رہے ہیں کیونکہ ہماری جمہوریت اس بنیاد پر کھڑی ہے کہ لوگ جانتے ہیں کہ ان کے ووٹ سے فرق پڑتا ہے۔‘

ڈونلڈ ٹرمپ کے اس بیان پر ان کی اپنی پارٹی کے بہت سے ارکان نے ان پر تنقید کی ہے۔

اس سے قبل ڈونلڈ ٹرمپ نے دعویٰ کیا تھا کہ ان کے خلاف اس انتخاب میں دھاندلی کی جا رہی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں