ٹرمپ امریکہ اور دنیا کے لیے خطرہ ہیں: اوباما

اوباما تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

امریکی صدر براک اوباما نے ڈیموکریٹ جماعت کے تمام حامیوں سے کہا ہے کہ وہ الیکشن میں بھرپور حصہ لیں اور متنبہ کیا کہ امریکہ اور دنیا کی قسمت داؤ پر ہے۔

انھوں نے رپبلکن جماعت کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کے بارے میں کہا کہ وہ جدوجہد کے بعد حاصل کی گئی شہری آزادیاں، امریکہ اور دنیا کے لیے خطرہ ہیں۔

صدر اوباما نے یہ بات جنوبی کیرولائنا میں ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

دوسری جانب ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ صدر اوباما کو ہلیری کلنٹن کی مہم چلانا بند کرنا چاہیے اور ملک کو چلانے پر توجہ دیں۔ ٹرمپ نے کہا 'اصل بات یہ ہے کہ کوئی بھی اوباما کے مزید چار سال نہیں چاہتا۔'

صدارتی انتخابات میں اہم ریاست جنوبی کیرولائنا میں ریلی سے خطاب کرتے ہوئے اوباما نے کہا 'امریکہ کی قسمت کی ذمہ داری آپ لوگوں کے کندھوں پر ہے۔ دنیا کی قسمت لڑکھڑا رہی ہے اور آپ لوگ ہی ہیں جو اس بات کو یقینی بنا سکتے ہیں کہ اسے سہارا دیا جائے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

یاد رہے کہ امریکی صدارتی الیکشن میں ایک ہفتے سے بھی کم وقت رہ گیا ہے اور ایک نئے نیشنل پول کے مطابق پہلی بار رپبلکن جماعت کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کو ایک پوائنٹ کی برتری حاصل ہوئی ہے۔

اے بی سی کی جانب سے کیے گئے نئے نیشنل پول کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ کو ڈیموکریٹ جماعت کی صدارتی امیدوار ہلیری کلنٹن پر ایک پوائنٹ کی سبقت حاصل ہے۔

اے بی سی پول میں ٹرمپ کو 46 فیصد اور ہیلری کو 45 پوائنٹس ملے ہیں۔

آٹھ نومبر کو ہونے والے انتخابات سے قبل دونوں امیدواروں نے اپنی انتخابی مہم تیز کر دی ہے۔

یاد رہے کہ حال ہی میں ایف بی آئی نے غیر متوقع طور پر 2001 میں سابق صدر بل کلنٹن کی کی جانے والی تفتیش کے 129 دستاویزات جاری کر دیے ہیں، جن کا ہلیری کلنٹن کی مقبولیت پر منقی اثر متوقع ہے۔

بل کلنٹن نے 2001 میں ڈیموکریٹ جماعت کو عطیہ دینے والے شخص مارک رچ کو صدارتی معافی دی تھی۔

یہ دستاویزات ایف بی آئی نے این بی سی نیوز کی جانب سے فریڈم آف انفارمیشن ایکٹ کے تحت دی گئی درخواست پر عام کیے ہیں۔

یاد رہے کہ یہ تحقیق 2005 میں بند کر دی گئی تھی۔

ہلیری کلنٹن کی ٹیم نے ان دستاویزات کو ایسے وقت منظر عام پر لانے پر سوالات اٹھائے ہیں جب انتخابات میں ایک ہفتے سے بھی کم وقت رہ گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

ہلیری کلنٹن کی مہم نے امریکی تفتیشی ادارے ایف بی آئی کے ڈائریکٹر کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

کلنٹن کی انتخابی مہم نے ان کی ای میل کے استعمال کے متعلق نئی تحقیقات پر ایف بی آئی کے ڈائریکٹر جیمز کومی پر دوہرے معیار برتنے کا الزام لگایا ہے۔

یہ بیان اس وقت سامنے آیا جب امریکی میڈیا کے مطابق جیمز کومی نے برملا روس پر امریکی انتخابات میں مداخلت اور مبینہ ای میل ہیکنگ کا الزام لگایا ہے۔

اسی بارے میں