ڈالر کے مقابلے میں برطانوی پاؤنڈ کی قدر میں اضافہ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

برطانوی ہائی کورٹ کے آرٹیکل 50 پر فیصلے کے بعد ڈالر کے مقابلے میں برطانوی پاؤنڈ کی قدر میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے جبکہ ایف ٹی ایس ای میں گراوٹ دیکھی گئی ہے۔

فیصلے کے بعد برطانوی پاؤنڈ کی قدر بڑھ کر 1.2421 ڈالر ہو گئی ہے لیکن ایف ٹی ایس ای 100 میں 16 پوائنٹس کی کمی ہوئی ہے۔

ای ٹی ایکس کیپیٹل کے نیل ولسن کا کہنا ہے کہ ’عدالت کے فیصلے نے بریکسٹ کو مزید مشکل بنا دیا ہے اور پاؤنڈ کو بڑا دھچکہ پہنچایا ہے۔‘

بینک آف انگلینڈ کی تازہ انفلیشن رپورٹ جو آج دوپہر کو شائع کی گئی ہے، اس سے پاؤنڈ بھی اثر انداز ہو سکتا ہے۔

توقع ہے کہ بینک کی جانب سے شرح سود کو بھی 0.25 فیصد پر ہی منجمد کر دیا جائے گا لیکن اس کے ساتھ ہی وہ برطانیہ معاشی شرح نمو اور افراط زر کے بارے میں اپنی پیش گوئی بہتر بنائے گا۔

برطانوی پاؤنڈ کی قدر میں یورو کے مقابلے میں بھی 1.3 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

سپریڈیکس کے کونور کیمبل نے کہا ہے کہ اس عدالتی فیصلے کو آئندہ ماہ سپریم کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا۔

ایف ٹی ایس ای 100 میں سب سے زیادہ بہتری رائل بینک آف سکاٹ لینڈ میں ہوئی جو 6.3 فیصد رہی جبکہ رینڈگولڈ ریسورسز میں سے سب سے زیادہ 6.7 فیصد گراوٹ دیکھی گئی۔

موریسنز کے حصص میں بھی 2.1 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں