کینیڈا میں مسافر طیارہ ڈرون سے ٹکراتے ٹکراتے بچا

ڈرون تصویر کے کاپی رائٹ AFP

کینیڈا میں حکام اس معاملے کے تفتیش کر رہے ہیں جس میں ایک طیارے کو دوران پرواز ڈرون سے ہونے والی ممکنہ ٹکّر سے بچنے کے لیے حفاظتی اقدامات کرنے پڑے۔

کینیڈا کے ٹرانسپورٹیشن سیفٹی بورڈ کے حکام اس معاملے کی تفتیش کر رہے ہیں۔

ٹرانسپورٹیشن سیفٹی بورڈ نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ مقامی وقت کے مطابق تقریباً ساڑھے سات بجے اوٹاوا سے ٹورنٹو جانے والی پورٹر ایئر لائن کی فلائٹ پرواز کے دوران ایک ڈرون سے ٹکراتے ٹکراتے بچی۔

ڈرون سے ہونے والی ممکنہ ٹکر سے بچانے کی اس کوشش میں جہاز کے عملے کے دو افراد زخمی بھی ہوگئے۔

بلی بشپ ایئر پورٹ کے حکام اس واقعے کی تہہ تک جانے کی کوشش میں ہیں۔

پیر کے روز جب مذکورہ طیارہ ٹورنٹو کے ایئر پورٹ پر اترنے سے عین قبل اونٹاریو جھیل کے اوپر تھا تو پائلٹ کی نظر دور فضا میں موجود ایک شے پر پڑی اور قریب پہنچنے پر پائلٹ کو معلوم چلا کہ یہ ڈرون ہے جو ان کے راستے میں ہے۔ انھوں نے اس سے بچنے کے لیے احتیاطی اقدامات کیے۔

حکام کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق پورٹر ایئر لائن ٹرانسپورٹیشن سیفٹی بورڈ کے تفتیش کاروں کے ساتھ تعاون کر رہی ہے۔

اس طیارے میں سوار عملے کے جن افراد کو چوٹیں آئی تھیں انھیں ہسپتال میں داخل کر دیا گیا۔ جہاز میں سوار 45 مسافروں کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔

ٹرانسپورٹ کینیڈا اور امریکہ میں شہری ہوا بازی کے وفاقی اداروں نے ایئر پورٹ کے آس پاس کے علاقے کو 'نو ڈرون زون' قرار دے رکھا ہے۔

اسی بارے میں