کینیا میں تیل کا ٹینکر پھٹنے سے 33 افراد جل کر ہلاک

کینیا
Image caption حادثے میں سڑک پر چلنے والی دوسری گاڑیاں بھی آگ کی لپیٹ میں آ گئیں

کینیا میں ایک تیل کا ٹینکر سڑک پر چلتے ہوئے پھٹ گیا جس سے کم از کم 33 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

کینیا کی ریڈ کراس کا کہنا ہے کہ یہ آئل ٹینکر یوگینڈا جا رہا تھا کہ دارالحکومت نیروبی کے شمال مغرب میں نائیواشا کے مقام پر بےقابو ہو کر دوسری گاڑیوں سے جا ٹکرایا۔

ایک عینی شاہد موزس ناندالوے نے بی بی سی کو بتایا کہ ٹینکر کے ٹکراتے ہی آگ کے شعلے بھڑک اٹھے جنھوں نے اس مصروف شاہراہ پر کئی گاڑیوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔

انھوں نے کہا کہ بہت سے لوگ وہ لوگ بھی آگ کی زد میں آ گئے جو یہ حادثہ دیکھنے کے لیے وہاں جمع ہو گئے تھے۔

جلنے والی گاڑیوں میں ایک منی بس شامل ہے جس میں سوار 14 مسافر مارے گئے۔

حادثات کے قومی ادارے کے ڈپٹی ڈائریکٹر مواچی پیئس مواچی نے کہا کہ ٹینکر اترائی میں جاتے وقت قابو سے باہر ہو گیا۔

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ یہ حادثہ ایک ایسے وقت پیش آیا ہے جب ڈاکٹر ہڑتال پر ہیں، جس کی وجہ سے سرکاری ہسپتالوں میں طبی سہولیات کی کمی ہے۔

اسی بارے میں