’میرے دورِ صدارت میں کوئی نیا کاروباری معاہدہ نہیں ہو گا‘

ٹرمپ تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ڈونلڈ ٹرمپ کے امریکہ اور بین الاقوامی سطح پر پھیلے ہوئے کاروبار میں ہوٹلز اور گالف کورسز شامل ہیں

امریکہ کے نو منتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ ان کے دورِ صدارت میں ان کے بیٹے ان کا کاروبار دیکھیں گے تاہم 'اب کوئی نیا معاہدہ نہیں ہو گا۔'

ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے کاروبار سے الگ ہونے سے متعلق اعلان مؤخر کرتے ہوئے ٹویٹ کی کہ وہ مستقبل قریب میں ایک نیوز کانفرنس میں اس بات کا فیصلہ کریں گے۔

* ڈونلڈ ٹرمپ اپنے کاروبار سے ’مکمل طور پر دست بردار‘

خیال رہے کہ امریکہ کے نو منتخب صدر جمعرات کو ایک نیوز کانفرنس میں یہ اعلان کرنے والے تھے کہ وہ کس طرح عہدۂ صدارت پر توجہ مرکوز کرنے کے لیے اپنے کاروبار سے علیحدگی اختیار کریں گے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے منگل ہی کو اپنی ٹویٹ میں اپنے وزیرِ خارجہ کا بھی اعلان کر دیا۔

امریکہ کے نومنتخب صدر کا اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر کہنا تھا کہ اگرچہ وہ قانونی طور پر ایسا کرنے کے پابند نہیں ہیں تاہم وہ اگلے سال 20 جنوری کو صدر بن جانے کے بعد اپنے کاروبار سے علیحدگی اختیار کر لیں گے۔

انھوں نے ٹویٹ کی کہ ان کے دو بیٹے ڈان اور ایرک کے علاوہ دیگر ایگزیکٹوز کاروبار کی دیکھیں گے تاہم ان کے دورِ صدارت کے دوران کوئی نیا معاہدہ نہیں ہو گا۔

ٹرمپ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ جمعرات کو کی جانے والی پریس کانفرنس اس لیے ملتوی کی گئی ہے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ تمام پروٹوکول پورے ہوئے ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ کے امریکہ اور بین الاقوامی سطح پر پھیلے ہوئے کاروبار میں ہوٹلز اور گالف کورسز شامل ہیں جن میں سے دو سکاٹ لینڈ میں ہیں۔ اس کے لیے کئی املاک اور ہوٹلوں، دفاتر اور رہائشی عمارات میں ان کا حصہ ہے۔

گذشتہ ماہ ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی ٹویٹس میں کہا تھا کہ عہدۂ صدارت سنبھالنے کے بعد وہ مفادات کے ٹکراؤ سے بچنے کے لیے اپنے کاروبار سے علیحدگی اختیار کر لیں گے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے کاربار سے علیحدگی سے متعلق اعلان اس لیے مؤخر کیا ہے کیونکہ وہ اس وقت اعلیٰ حکومتی تقرریاں کرنے پر توجہ دے رہے ہیں۔

اسی بارے میں