اوباما کا دورِ صدارت، تصاویر کی زبانی

  • 11 جنوری 2017

آٹھ سال کے اتار چڑھاؤ بھرے سفر کے بعد دس جنوری سنہ 2017 کو امریکی صدر براک اوباما نے امریکہ کے صدر کی حیثیت سے اپنا آخری خطاب کیا۔

مندرجہ ذیل میں ان کی چند تصاویر پیش کی جا رہی ہیں جو ان کی ذاتی اور پیشہ ورانہ زندگی کی عکاس ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ whitehouse.gov
Image caption انھوں نے اس خطاب کے لیے اس جگہ کا انتخاب کیا جہاں انھوں نے آٹھ سال قبل اس سفر کا آغاز کیا تھا
تصویر کے کاپی رائٹ whitehouse.gov
Image caption انھوں نے اپنے خطاب میں امریکہ میں جمہوریت بچائے رکھنے پر زور دیا
تصویر کے کاپی رائٹ whitehouse.gov
Image caption انھیں پہلے سیاہ فام امریکی صدر کے علاوہ بہترین خطابت کے لیے بھی یاد رکھا جائے گا
تصویر کے کاپی رائٹ whitehouse.gov
Image caption اپنے دور صدارت کی کامیابوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ وہ عظیم کساد بازاری کو ختم کرنے، آٹو انڈسٹری میں نئي جان ڈالنے اور تاریخ میں سب سے زیادہ روزگار فراہم کرنے میں کامیاب رہے۔
تصویر کے کاپی رائٹ whitehouse.gov
Image caption انھوں نے نسل و رنگ کے بارے میں کہا کہ ان کے انتخاب کے بعد 'لوگوں نے کہا تھا کہ امریکہ مابعد نسل پرستی کے عہد میں داخل ہو گیا ہے۔ یہ بات اگر چہ نیک نیتی سے کہی گئی تھی لیکن کبھی بھی حقیقت پسندانہ نہیں تھی'
تصویر کے کاپی رائٹ whitehouse.gov
Image caption وہ ہندوستان کے دورے پر آئے اور ہندوستان کے ساتھ اور بطور خاص نریندر مودی کے ساتھ ان کے تعلقات خوشگوار کہے جاتے ہیں
تصویر کے کاپی رائٹ whitehouse.gov
Image caption وائٹ ہاؤ‎س میں ایک بچے کے ساتھ کھیلتے ہوئے
تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption انھوں نے اپنے خطاب میں اپنی اہلیہ اور خاتون اول کو نہ صرف اپنی اہلیہ، اپنے بچوں کی ماں بلکہ اپنی بہترین رفیق بھی کہا