جونی ڈیپ کی طلاق کئی ماہ کے اختلافات کے بعد طے پا گئی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption جونی ڈیپ کے وکیل کا کہنا تھا کہ ایمبر ہرڈ گھریلو تشدد کے دعوے کر کے طلاق میں زیادہ پیسے بٹورنا چاہ رہی تھیں۔

کئی ماہ تک جاری رہنے والے مالی اختلافات کے بعد معروف امریکی اداکار جونی ڈیپ اور اداکارہ ایمبر ہرڈ کی طلاق طے پا گئی ہے۔

اطلاعات کے مطابق 53 سالہ جونی ڈیپ نے ایمبر ہرڈ کو ستر لاکھ امریکی ڈالر دینے کی رضا مندی ظاہر کر دی ہے اور اداکارہ کا کہنا ہے کہ وہ یہ رقم دو فلاحی تنظیموں کو عطیہ کر دیں گی۔

30 سالہ ایمبر ہرڈ جوڑے کے دو پالتو کتوں کو بھی اپنی تحویل میں رکھنے کی حقدار ہوں گی۔ 2015 میں وہ دونوں پالتو کتوں کو غیر قانونی طور پر آسٹریلیا لے گئی تھیں اور یہ معاملہ اس سکینڈل کا مرکز بن گیا تھا۔

ایمبر ہرڈ کا دعویٰ ہے کہ جونی ڈیپ ان پر ظلم کرتے تھے جبکہ جانی ڈیپ اس کی تردید کرتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ HAPPY DOGZ/ABC
Image caption جوڑے کے دو پالتو کتوں کی ملکیت طلاق کے اس سکینڈل کا مرکز بن گیا تھا

عدالتی دستاویزات کے مطابق اداکارہ کا دعویٰ ہے کہ جونی ڈیپ ان پر جشمانی تشدد کرتے تھے اور گذشتہ سال فروری میں جونی ڈیپ نے ایک لڑائی کے دوران ان کی جانب فون پھینکا تھا۔

جونی ڈیپ کے وکیل کا کہنا ہے کہ ایمبر ہرڈ گھریلو تشدد کے دعوے کر کے طلاق میں زیادہ پیسے بٹورنا چاہ رہی ہیں۔ اُس واقعے کے وقت پولیس نے جائے وقوع پر پہنچ کر کہا تھا کہ انھیں کسی بھی جرم کے کوئی شواہد نہیں ملے۔

اس طلاق کے مکمل طور پر طے پانے میں اتنے ماہ اس لیے لگے کیونکہ دونوں طرف کے وکلا اس بات پر اتفاقِ رائے پیدا نہیں کر سکے تھے کہ جونی ڈیپ براہِ راست فلاحی تنظیموں کو رقم ادا کریں یا نہیں۔

جونی ڈیپ اور ایمبر ہرڈ کے اس شادی سے کوئی بچے نہیں ہیں اور مئی 2016 میں جب دونوں کے درمیان اختلافات پیدا ہوئے تو ان کی شادی کو صرف 18 ماہ ہوئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں