ذاتی معلومات منکشف ہونے پر آکسفورڈ کالج کی معذرت

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption کم از کم 200 طلبا کو مسترد کیے جانے کے خطوط بھیجے گئے ہیں

آکسفورڈ یونیورسٹی کے تحت چلنے والے ایک کالج نے طلبا کے داخلے مسترد کیے جانے کی اطلاع دینے کے لیے کی گئی ای میل میں تمام تر طلبا کی تفصیلات بھیجے جانے کے واقعے کے بعد معذرت کی ہے۔

ہیرٹفورڈ کالج نے مسترد کیے جانے کی ای میلز کیں تاہم ان کے ساتھ تمام ناکام امیدواروں کے نام ، پتے اور مضمون سے متعلق تصفیلات بھی شامل کر دیں۔

کالج نے اس واقعے کے فوراً بعد پرنسپل وِل ہیوٹن کو مطلع کر دیا تھا جنہوں نے تمام طلبا سے اس ای میل کو ڈیلٹ کرنے کو کہا ہے۔

کم از کم 200 طلبا کو مسترد کیے جانے کے خطوط بھیجے گئے ہیں۔

کالج کے پرنسپل نے جو ایک مصنف، براڈ کاسٹر اور ماہر اقتصادیات بھی ہیں، ایک بیان میں کہا ہے کہ ’ہم تمام متاثرہ لوگوں سے معذرت کرتے ہیں جن کے لیے یہ غلطی پریشانی کا باعث بنی۔‘

’ہم اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ ایسی کوئی غلطی دوبارہ نہ ہو جس میں لوگوں کی ذاتی معلومات کا ذکر ہو۔‘

اسی بارے میں